آئی جی پنجاب شعیب دستگیر تبدیل

لاہور پولیس کے سربراہ عمر شیخ سے تنازع کے بعد آئی جی پنجاب شعیب دستیگر کو تبدیل کردیا گیا۔ وزیراعظم عمران خان نے نئے آئی جی پنجاب کیلئے نام مانگ لئے ہیں۔

آئی جی پنجاب کی وزیراعلی عثمان بزدار سے ملاقات کا بھی نتیجہ برآمد نہ ہوسکا۔ شعیب دستگیر تیسرے روز بھی دفتر نہیں آئے اور ان کی تبدیلی کی خبر آگئی۔

ذرائع کے مطابق آئی جی نے وزیراعلی سے شکایت کی تھی کہ سی سی پی او نے ان کی کمانڈ کے متعلق میٹنگ میں بات کی اور پولیس افسران کو احکامات نہ ماننے کا حکم دیا۔ ذرائع کے مطابق سی سی پی او عمر شیخ نے افسران کو آئی جی پنجاب کے براہ راست حکم ماننے سے منع کیا تھا اور ہدایت کی تھی کہ آئی جی کے احکامات پہلے ان کے علم میں لائے جائیں۔

ذرائع نے زبرنیوز کو بتایا تھا کہ وفاق اور پنجاب کے حکام نے سی سی پی او لاہور کو تبدیل نہ کرنے کا فیصلہ کیا تھا اور واضح کردیا تحا کہ اگر کوئی پنجاب میں کام نہیں کرنا چاہتا تو اس کی مرضی ہے۔

سی سی پی او عمر شیخ نے بھی کہہ دیا تھا کہ لاہور میں سب افسران کو کام کرنا ہے جس نے نہیں کرنا وہ جاسکتا ہے۔ آئی جی شعیب دستگیر کی تبدیلی کے بعد اب پنجاب میں 2 سال کے دوران 5 آئی جی تبدیل ہوچکے ہیں۔ ان میں کلیم امام ، محمد طاہر ، امجد سلیمی ، عارف نواز اور شعیب دستیگر شامل ہیں۔

ٹرینڈنگ

مینو