مقبوضہ کشمیر ڈبل لاک ڈاؤن کا شکار، ڈاکٹر اسد

امریکا میں پاکستانی سفیر ڈاکٹر اسد مجید خان نے کہا ہے کہ مودی سرکار نے مقبوضہ کشمیر میں بے گناہ افراد پر ظلم و ستم کی انتہا کردی ہے۔

امریکی اخبار واشنگٹن ٹائمز میں لکھے گئے مضمون میں ڈاکٹر اسد مجید خان نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر اس وقت ڈبل لاک ڈاؤن کا شکار ہے۔ بھارتی حکومت بے گناہ کشمیریوں پر ظلم ڈھارہی ہے۔

سفیر پاکستان نے لکھا کہ بے گناہ کشمیری 9 ماہ سے لاک ڈاؤن کی صعوبتیں برداشت کر رہے ہیں،  کورونا وائرس نے صورتحال کو مزید تشویشناک بنا دیا ہے۔

ڈاکٹر اسد مجید خان نے بتایا کہ بی جے پی حکومت نے ایک آرڈیننس کے ذریعے مقبوضہ کشمیر کی آبادی کا تناسب بدلنے کی کوشش کی۔ مودی سرکار ہندوتوا کے فلسفے پر عمل پیرا ہے اور بھارت کو بتدریج ہندو راشٹر میں تبدیل کیا جارہا ہے۔

انھوں نے لکھا کہ دسمبر 2019  میں بھارتی حکومت نے مسلم اقلیتوں کی شہریت ختم کرنے کیلئے قانون پاس کیا اور اب بھارت میں تمام اقلیتیں خود کو غیر محفوظ تصور کرتی ہیں۔

سیفر پاکستان نے لکھا کہ بی جے پی حکومت نے کورونا وبا کے دوران سوشل میڈیا پر جھوٹی مہم کے ذریعے مسلم اقلیت کو مورد الزام ٹھہرانے کی کوشش کی۔ بھارت میں انتخابات کے قریب بی جے پی مسلم دشمنی کو ہوا دیتی ہے تاکہ انتخابات میں فتح یقینی بنائی جاسکے۔

انھوں نے لکھا کہ مودی سرکار کی غیر ذمے دارانہ پالیسیوں کے باعث جنوبی ایشیاء میں امن کو شدید خطرات لاحق ہیں۔ سفیر پاکستان نے خطے میں امن کے خواہاں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی مصالحت کی پیشکش قبول کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔

ٹرینڈنگ

مینو