کلبھوشن سے بھارتی نظم الامور کی ملاقات

محمد عثمان

بھارت نے جاسوس کمانڈر کلبھوشن یادیو کو دوسری قونصلر رسائی دینے کی پاکستانی پیشکش قبول کرلی اور بھارتی ناظم الامور نے کلبھوشن سے ملاقات کی ہے۔  

بھارتی ناظم الامور گورو اہلووالیا نے اسلام آباد میں کلبھوشن سے ملاقات کی ، بھارتی دہشت گرد کی موجودگی کے مقام کو سب جیل قرار دیا گیا اور خفیہ رکھا گیا تھا۔ پاکستان نے بھارتی جاسوس کو سزا کے خلاف اسلام آباد ہائی کورٹ میں اپیل کا موقع دیا لیکن اس نے انکار کردیا تھا۔

دفترخارجہ کے مطابق ویانا کنونشن کے تحت پہلی قونصلر رسائی 2 ستمبر 2019 کو فراہم کی گئی اور 25 دسمبر 2017 کو کلبھوشن یادیو کی والدہ اور اہلیہ سے ملاقات کرائی گئی تھی۔

ترجمان دفترخارجہ عائشہ فاروقی کا کہنا ہے کہ بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو سے متعلق عدالتی فیصلے پر نظر ثانی پٹیشن فائل کرنے کی مدت 60 روز ہے، امید ہے بھارت اس حوالے سے پاکستان سے تعاون کرے گا۔

کلبھوشن یادیو کو 2016 میں بلوچستان سے گرفتار کیا گیا تھا، اس نے مجسٹریٹ اور عدالت کے سامنے پاکستان میں دہشت گردی کا اعتراف کیا، پاکستان آرمی ایکٹ کے تحت را کے ایجنٹ کلبھوشن یادیو عرف حسین مبارک پاٹیل کو سزائے موت سنائی گئی تھی۔

ٹرینڈنگ

مینو