جنرل سلیمانی کے مخبر کو سزائے موت

ایران نے مقتول جنرل قاسم سلیمانی کی مخبری کے مجرم موسوی ماجد کو سزائے موت دے دی۔

ایرانی خبر ایجنسی کے مطابق محمد موسوی ماجد نے سیکیورٹی حکام، افواج اور جنرل قاسم سلیمانی سے متعلق معلومات سی آئی اے اور موساد کو دی تھیں۔ ایرانی عدلیہ کے ترجمان غلام حسین اسماعیلی نے مجرم کی سزا پر عملدرآمد کی تصدیق کردی ہے۔

امریکا نے 3 جنوری کو عراق کے دارالحکومت بغداد میں ڈرون کے ذریعے القدس فورس کے کمانڈر جنرل قاسم سلیمانی کی گاڑی کو نشانہ بنایا تھا، جنرل سلیمانی اس حملے میں جاں بحق ہوگئے تھے۔

ایران نے اس اقدام کے بعد عراق میں امریکی فوجی اڈے پر راکٹ حملہ کیا تھا جس میں کئی امریکی فوجی زخمی ہوئے تھے۔

ایران نے کچھ روز پہلے ہی جنرل قاسم سلیمانی کے قتل کا ذمے دار قرار دے کر امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سمیت 36 افراد کے وارنٹ گرفتاری جاری کئے ہیں۔

تہران کے پراسیکیوٹر جنرل علی مہر کا کہنا ہے کہ جنرل قاسم سلیمانی پر حملے میں ملوث 36 افراد کو شناخت کیا گیا ہے، انھوں نے قتل میں تعاون کیا یا حصہ لیا تھا، 36 افراد میں امریکا اور دیگر ممالک کے سیاسی اور عسکری حکام بھی شامل ہیں۔ ان میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا نام سرفہرست ہے اور انھیں قانونی چارہ جوئی کا سامنا کرنا پڑے گا۔ ان تمام افراد پر دہشت گردی اور قتل کا مقدمہ چلایا جائے گا، ایران نے انٹرپول سے مطالبہ کیا ہے کہ صدر ٹرمپ کے ریڈ وارنٹ جاری کئے جائیں۔

ٹرینڈنگ

مینو