اسرائیل یواے ای سفارتی تعلقات بحال ہوں گے

اسرائیل اور متحدہ عرب امارات سفارتی تعلقات بحال کرنے سمیت امن معاہدے پر متفق ہوگئے، اس بات کا اعلان امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کیا ہے۔

صدر ٹرمپ نے ٹوئٹ کرکے بتایا کہ متحدہ عرب امارات اور اسرائیل کے تعلقات معمول پر آنا بہت بڑا بریک تھرو ہے، انھوں نے اسے امریکا کے 2 دوست ممالک کے درمیان تاریخی امن معاہدہ قرار دیا۔

مشترکہ اعلامیئے کے مطابق صدر ڈونلڈ ٹرمپ ، اسرائیلی وزیراعظم بنجمن نیتن یاہو اور ابوظہبی کے ولی عہد شیخ محمد بن زاید نے گفتگو کے دوران اسرائیل اور یو اے ای کے درمیان تعلقات معمول کی بحالی پر اتفاق کیا۔

ڈیل کے تحت صیہونی ریاست غرب اردن کے مزید علاقے اسرائیل میں ضم کرنے کے منصوبے پر عمل نہیں کرے گی۔ اس اقدام کو مشرق وسطی میں امن کی جانب بڑا قدم قرار دیا گیا ہے، اب اسرائیل اور عرب امارات کے وفود آئندہ چند ہفتوں میں ملاقات کریں گے، اس میٹنگ میں سفارتی تعلقات بحال کرنے ، سرمایہ کاری ، سیاحت ، براہ راست پروازوں، سیکیورٹی ، ٹیلی کمیونی کیشنز، ٹیکنالوجی ، انرجی ، ہیلتھ کیئر ، ثقافت اور ماحولیات سے متعلق معاہدوں پر دستخط کئے جائیں گے۔

اسرائیل اور متحدہ عرب امارات امریکا کے ساتھ مل کر واشنگٹن کے اسٹریٹجک ایجنڈے کو آگے بڑھائیں گے ، اس کے تحت تجارت اور سیکیورٹی سے متعلق تعاون بڑھایا جائے گا۔

امریکا میں یو اے ای کے سفیر یوسف العیبہ نے ایک بیان میں اس ڈیل کو سفارت کاری اور خطے کی جیت قرار دیا، انھوں نے کہا کہ یہ عرب اسرائیلی تعلقات میں اہم پیش رفت ہے جس سے کشیدگی کم ہوگی اور مثبت تبدیلی آئے گی۔

ٹرینڈنگ

مینو