کاملا ہیرئس پہلی سیاہ فام نائب صدارتی امیدوار

امریکا کے ڈیموکریٹ صدارتی امیدوار جو بائیڈن نے کاملا ہیرئس کو نائب صدارتی امیدوار بنالیا۔ جو بائیڈن نے کاملا کے انتخاب کو اپنے لئے اعزاز قرار دیا ہے جبکہ صدر ٹرمپ نے ہیرئس کو ہولناک قرار دیتے ہوئے بائیڈن کے اقدام پر حیرت کا اظہار کیا ہے۔

جوبائیڈن نے وہی کیا جس کی ان سے امید تھی، کاملا ہیرئس کو نائب صدارتی امیدوار منتخب کرلیا اب ان کے نام کی توثیق 17 سے 20 اگست تک ہونے والے ڈیموکریٹ کنونشن میں کی جائے گی۔

جو بائیڈن نے بیان میں کاملا ہیرئس کو بھرپور فائٹر اور اعلی پبلک سرونٹ قرار دیا اور کہا کہ ایسی خاتون کو نائب صدارتی امیدوار چننا ان کیلئے اعزاز ہے۔

سینیٹر کاملا ہیرئس کیلی فورنیا کے شہر اوک لینڈ کی رہائشی ہیں ، وہ صدارتی امیدوار بننا چاہتی تھی البتہ دسمبر میں ہی دوڑ سے باہر ہوگئی تھیں۔

کاملا ہیرئس کی والدہ شیاملا کا تعلق بھارت اور والد کا جمیکا سے ہے، کاملا 1960 کی دہائی میں امریکا آئی تھیں ، وہ ہارورڈ یونیورسٹی سے فارغ التحصیل ہیں۔

صدر ٹرمپ کی انتخابی مہم میں شامل افراد نے کہا ہے کہ کچھ عرصہ پہلے ہی کاملا نے بائیڈن کو نسل پرست کہا تھا اور بائیڈن نے ان کا معافی کا مطالبہ اب تک پورا نہیں کیا۔ صدر ٹرمپ نے کاملا ہیرئس کو ہولناک قرار دیتے ہوئے بائیڈن کے انتخاب پر حیرت کا اظہار کیا ، ان کا کہنا ہے کہ کئی مرد اس میں اپنی توہین محسوس کریں گے کہ جوبائیڈن نے خاتون کو نائب امیدوار بنایا ہے۔

ٹرینڈنگ

مینو