ڈاکٹر ماہا کا والدین سے جھگڑا رہتا تھا، دوست

کراچی میں مبینہ خودکشی کرنے والی ڈاکٹر ماہا شاہ کے قریبی دوست جنید نے پولیس کو دیئے گئے بیان میں کہا ہے کہ ماہا کا والدین سے جھگڑا رہتا تھا۔

پولیس ذرائع نے زبرنیوز کو بتایا کہ ڈاکٹر ماہا کیس کی تحقیقات میں اہم پیش رفت ہوئی ہے، شہر قائد کے علاقے گزری میں مبینہ خودکشی کیلئے استعمال کیا گیا پستول سعد نصیر کے نام پر ہے جو 2010 میں خریدا گیا تھا، اسلحے کا لائسنس سندھ سے جاری نہیں کیا گیا اور اب سعد نصیر سے تفتیش کی جائے گی۔

پولیس نے ڈاکٹر ماہا کے دوست جنید کا بیان بھی ریکارڈ کرلیا ہے،جنید کے مطابق اس کے اور ڈاکٹر ماہا کے 4 سال سے تعلقات تھے اور وہ جلد شادی کرنے والے تھے۔

جنید نے تصدیق کی کہ وہ ماہا کو روز نجی اسپتال چھوڑنے جاتا اور لے کر آتا تھا البتہ خودکشی کے دن ماہا نے گھر آنے سے منع کردیا تھا۔

جنید نے دعویٰ کیا کہ ماہا کا والدین سے جھگڑا رہتا تھا، وہ گھریلو پریشانیوں کے باعث ڈپریشن کی شکار تھی۔

ٹرینڈنگ

مینو