آزمائش گناہوں کا نتیجہ ہیں، خطبہ حج

شیخ عبداللہ بن سلیمان نے خطبہ حج میں مسلمانوں کو تقویٰ کی نصیحت کرتے ہوئے کہا ہے کہ مشکلات اللہ کی طرف سے امتحان ہیں اور عبادتوں کے ذریعے ہی مصیبت سے چھٹکارا ملتا ہے۔ مشکلات دائمی نہیں اللہ کا فرمان ہے ہر مشکل کے بعد آسانی ہے۔

مسجد نمرہ سے خطبہ حج دیتے ہوئے شیخ عبداللہ بن سلیمان نے کہا کہ اگر کورونا آزمائش ہے تو اللہ کی رحمت کے دروازے بھی کھلے ہیں، ہمارے گناہوں کی وجہ سے ہی اللہ نے آزمائش میں ڈالا۔ شیخ عبداللہ بن سلیمان نے کہا کہ نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا اگر کسی جگہ وبائی مرض پھیلے تو وہاں نہ جاؤ، جس جگہ وبائی مرض ہو وہاں کے لوگ کسی اور جگہ نہ جائیں۔

انھوں نے کہا کہ نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم رحمت بنا کر بھیجے گئے، متقی افراد تنگ دستی سے دور رہتے ہیں، اہل تقویٰ کی صفات میں اولین صبر ہے، آج مسلمانوں کی بہت بڑی تعداد اللہ کی تعلیمات سے غافل نظر آتی ہے۔ شیخ عبداللہ کا کہنا تھا کہ اللہ شرک پسند نہیں کرتا ، مسلمان خرافات سے دور رہیں۔ عبادتوں کے ذریعے ہی مصیبتوں سے چھٹکارا ملتا ہے۔

حج کا رکن اعظم وقوف عرفات ادا کردیا گیا ہے، حجاج اب مزدلفہ میں مغرب اور عشا کی نمازیں ملا کر ادا کریں گے، رات بھر مزدلفہ میں کھلے میدان اور پہاڑوں پر قیام کیا جائے گا۔

حجاج جمعہ کو نماز فجر کے بعد منی روانہ ہوں گے جہاں وہ شیطانوں کو کنکریاں مارنے کے بعد قربانی کریں گے، اس کے بعد سر منڈوا کر احرام کھول دیئے جائیں گے اور پھر طواف زیارت ہوگا۔

کورونا کی وجہ سے اس بار تقریبا 10 ہزار افراد کو حج کی اجازت دی گئی ہے، ان میں سے 70 فیصد سعودی عرب میں مقیم غیرملکی ہیں۔

ٹرینڈنگ

مینو