پی ڈی ایم کو پشاور جلسے کی اجازت نہ مل سکی

پشاور انتظامیہ نے کورونا وبا کا پھیلاو روکنے کیلئے پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کو جلسے کی اجازت دینے سے انکار کردیا۔ اپوزیشن اتحاد نے حکومتی فیصلہ مسترد کرتے ہوئے ہر صورت پاور شو کا اعلان کیا ہے۔

پشاور انتطامیہ نے وبا کی دوسری لہر کے باعث عوامی اجتماعات سے گریز اختیار کرنے کی ہدایت کی ہے۔ ڈپٹی کمشنر کے مطابق ضلع میں اس وقت کورونا کی شرح 13 فیصد سے بھی بڑھ گئی ہے۔

حکام کے مطابق بڑے عوامی اجتماعات سے کورونا کے پھیلاؤ کا خدشہ ہے اور انسانی جانیں بچانے کیلئے جلسے کی اجازت نہیں دی جاسکتی۔

اے این پی خیبر پختونخوا کے صدر ایمل ولی خان نے کہا ہے کہ جمہوری قوتوں کا راستہ روکنے کی کوشش کی جارہی ہے، اوچھے ہتھکنڈوں کے باوجود 22 نومبر کو پشاور میں سرخ پوشوں کا سمندر امڈ آئے گا۔

پیپلزپارٹی نے جلسے کی اجازت نہ دینے کا فیصلہ مسترد کردیا ،پی پی رہنما فیصل کریم کنڈی کا کہنا ہے کہ 22 نومبر کو جلسہ ضرور ہوگا ، اپوزیشن پی ٹی آئی کی گرتی ہوئی دیوار کو ایک دھکا اور دے گی۔ ن لیگ نے بھی فیصلہ مسترد کرتے ہوئے سوال کیا ہے کہ عمران خان اور محمود خان نے کس کی اجازت سے سوات مہمند اور باجوڑ میں جلسے کئے؟

ٹرینڈنگ

مینو