پیٹرول بحران : تحقیقاتی کمیشن کا حکم

لاہور ہائیکورٹ نے پیٹرول بحران کی تحقیقات کیلئے کمیشن بنانے کا حکم دیتے ہوئے اٹارنی جنرل سے کمیشن کیلئے نام طلب کرلئے۔

چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ جسٹس قاسم خان نے پیٹرول بحران سے متعلق درخواست پر سماعت کی، اس موقع پر سیکریٹری ٹو وزیراعظم اور اٹارنی جنرل بھی موجود تھے۔ چیف جسٹس نے اٹارنی جنرل سے پوچھا آپ نے بتایا نہیں بحران کے ذمے داروں کے خلاف حکومت نے کیا کارروائی کی۔

اٹارنی جنرل نے بتایا کہ انھوں نے عدالتی حکم پر اسپیکر قومی اسمبلی سے بات کی، اسپیکر اب یہ معاملہ وزیراعظم اور قائد حزب اختلاف کے سامنے رکھیں گے۔

چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ نے ریمارکس دیئے کہ ایسا لگتا ہے بحران میں کچھ بڑے لوگ ملوث ہیں، لگتا ہے آئل مافیا نے فائدے کیلئے پیٹرول کی قلت پیدا کی ، حکومت نے 26 جون کو (قبل از وقت) قیمتیں بڑھا کر  مافیا کو اربوں روپے کا فائدہ پہنچایا، عدالت نے وزیراعظم کے پرنسپل سیکریٹری کے تحریری جواب پر عدم اطمینان کا اظہار کیا اور کہا کہ پرنسپل سیکریٹری بتائیں معاملہ وزیراعظم کے علم میں کب لایا گیا اور کب کارروائی شروع ہوئی ؟

چیف جسٹس نے بحران کی تحقیقات کیلئے کمیشن بنانے کا حکم دیا اور کہا کہ اٹارنی جنرل نے کمیشن کیلئے بہتر نام تجویز نہ کئے تو عدالت خود نام تجویز کرے گی، لگتا ہے حمام میں سب کے کپڑے اتریں گے۔  کیس کی مزید سماعت 16 جولائی کو ہوگی۔

ٹرینڈنگ

مینو