امریکا:20 ریاستوں میں کرفیو، انٹیفا دہشتگرد

امریکا میں سیاہ فام شہری جورج فلائیڈ کی پولیس کے ہاتھوں ہلاکت کے خلاف پرتشدد احتجاج جاری ہے ، 20 سے زائد ریاستوں میں کرفیو لگانا پڑا ہے ، وائٹ ہاوس کے دروازے پر بھی مظاہرین اور سیکیورٹی اہلکاروں کی جھڑپیں ہوئی ہیں، امریکی صدر نے تشدد کا ذمے دار قرار دے کر بائیں بازو کی تنظیم انٹیفا کو دہشت گرد قرار دینے کا اعلان کردیا ہے۔

واشنگٹن ڈی سی میں دوسرے روز بھی شدید احتجاج کیا گیا ، واشنگٹن میں مظاہرین اور سیکیورٹی اہلکاروں کی نہ صرف گلی گلی لڑائی ہوئی بلکہ وائٹ ہاوس کے گیٹ پر بھی تصادم ہوتا رہا۔

سیکڑوں مظاہرین نے وائٹ ہاوس کو گھیرا تو سیکیورٹی اہلکار بھی ڈٹ گئے، اس دوران سیکریٹ سروس ایجنٹس اور مظاہرین میں جھڑپیں ہوئیں ، اہلکاروں نے لاٹھی چارج کیا اور اسپرے کا بھی استعمال کیا گیا، مشتعل افراد نے اہلکاروں کی 3 گاڑیوں کو نقصان پہنچایا، مظاہرین نے وائٹ ہاوس میں داخلے کی کوشش کی تو ایک شخص کو حراست میں لے لیا گیا۔

صدر ٹرمپ کی موجودگی کے باعث وائٹ ہاوس کا سخت لاک ڈاون کیا گیا، ڈی سی سمیت کئی ریاستوں میں نیشنل گارڈز کو بھی طلب کرنا پڑا ہے۔

سیاہ فام شہری جورج فلائیڈ کی پولیس کے ہاتھوں ہلاکت کے خلاف شہر شہر احتجاج کیا جارہا ہے اور مختلف ریاستوں میں کرفیو لگانا پڑا ہے۔

مظاہرین جگہ جگہ سیکیورٹی اہلکاروں سے گتھم گتھا ہوئے اور فورسز کو مرچوں کے اسپرے ، اسٹن گن ، ربڑ کی گولیوں اور آنسو گیس کا استعمال کرنا پڑا۔

احتجاج کے دوران نامعلوم افراد نے درجنوں عمارتیں جلادیں اور کاروباری مراکز لوٹے جاچکے ہیں۔

ملک بھر میں سیکڑوں افراد کو گرفتار کیا جا چکا ہے اور پرتشدد واقعات میں 3 اموات بھی ہوچکی ہیں۔

منی سوٹا ، لاس اینجلس ، فیلڈیلفیا ، شکاگو اور نیویارک میں بدامنی کے واقعات ہوئے ہیں اور اب کئی مقامات پر نیشنل گارڈز تعینات کرنے پڑے ہیں۔

سیاہ فام سیاسی رہنماؤں نے پرتشدد احتجاج کی مخالفت کرتے ہوئے مظاہرین سے پرامن رہنے کی اپیل کی ہے لیکن مظاہرین کا غصہ کم نہیں ہوسکا ہے۔

صدر ٹرمپ نے فوج کو 4 گھنٹے کے نوٹس پر گلیوں میں تعینات ہونے کیلئے تیاری کا حکم دے دیا ہے، اس سے پہلے ایسا 1992 کے فسادات میں ہوا تھا۔

ڈونلڈ ٹرمپ نے تشدد کا الزام لگا کر بائیں بازو کی تنظیم انٹیفا کو دہشت گرد قرار دینے کا اعلان کیا ہے۔

صدر کا کہنا ہے کہ انتفا نے پرامن احتجاجی مظاہرے کو ہائی جیک کیا، مینیاپولیس کے میئر پہلے دن تنظیم پر پابندی لگادیتے تو سب ٹھیک ہوجاتا۔

ٹرینڈنگ

مینو