نیب قوانین : اپوزیشن موقف پر ڈٹ گئی

محمد عثمان

حکومت نے اپوزیشن کے ساتھ مل کر نیب کے نئے قوانین بنانے کی کوششیں تیز کردیں جبکہ حزب اختلاف کی تمام بڑی جماعتوں نے مجوزہ ترمیم کا مسودہ ناقابل قبول قرار دے دیا ہے۔  

وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے بیان میں کہاکہ قومی سلامتی اور نیب سے متعلق نقطہ نظر اپوزیشن کے سامنے رکھ دیا گیا ہے، کوشش ہے مل بیٹھ کر قوانین بنائے جائیں۔ شاہ محمود قریشی نے نام لئے بغیر کہا کہ بے دردی سے ملک لوٹنے والوں کا احتساب ہر حال میں ہونا چاہئے۔

چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری پہلے ہی چیئرمین نیب سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کرچکے ہیں ، وہ کہہ چکے ہیں کہ نیب آفس کو تالا لگادیا جائے۔ نون لیگ نے بھی چیئرمین نیب کی مدت ملازمت میں توسیع کی حمایت نہ کرنے کا اعلان کیا ہے۔

نون لیگی رہنما اور سابق اسپیکر قومی اسمبلی ایاز صادق نے ایک انٹرویو میں بتایا کہ متحدہ اپوزیشن ڈپٹی چیئرمین اور پراسیکیوٹر جنرل نیب کی مدت ملازمت میں توسیع کی تجویز بھی قبول نہیں کرے گی۔

حکومت نیب قوانین میں تبدیلی کا مسودہ اپوزیشن کو پیش کرچکی ہے اور اس سلسلے میں اہم اجلاس بھی ہوا جو ناکام رہا۔ امکان ہے کہ حکومت چیئرمین نیب ، ڈپٹی چیئرمین اور پراسیکیوٹر جنرل کی مدت ملازمت میں توسیع کے مطالبے سے دستبردار ہوجائے گی۔

ٹرینڈنگ

مینو