لڑلیتے ہیں ، نوید قمر کو غصہ آگیا

وفاقی وزیر علی زیدی نے پیپلزپارٹی پر کڑی تنقید کی تو جیالے بھی میدان میں آگئے۔ پیپلزپارٹی کے رکن قومی اسمبلی نوید قمر نے ایوان میں لڑائی کیلئے کوٹ اتار لیا۔

وفاقی وزیر علی زیدی نے کہا کہ عزیر بلوچ نے جن کے کہنے پر لوگوں کو قتل کیا وہ یہاں آکر بجٹ پر تقاریر کرتے ہیں ، چیئرمین پیپلزپارٹی نے انھیں کرپٹ وزیر کہا، وہ اپنے بچوں کو حرام نہیں کھلاتے۔

علی زیدی نے کہا کہ ملک میں دہشت گردی پیپلزپارٹی لائی، 1981 میں الذوالفقار نے طیارہ اغوا کیا، خالد شہنشاہ کو قتل کس نے کیا، بینظیر کا قاتل کون تھا ، سعید غنی کا بھائی ڈرگ سپلائرز کی سرپرستی کرتا ہے۔

اس دوران نوید قمر کو غصہ آگیا اور انھوں نے اپنا کورٹ اتارتے ہوئے کہا اگر لڑائی کرنی ہے تو کرلیں۔

جیالے عبدالقادر پٹیل کھڑے ہوئے اور کہا کہ عمران خان سے متعلق امریکی عدالت کا فیصلہ موجود ہے ، وہ بولنا چاہتے تھے لیکن اسپیکر نے ان کا مائیک بند کرادیا جس پر اپوزیشن اراکین مک گیا تیرا شو نیازی گو نیازی گو نیازی کے نعرے لگاتے ہوئے واک آوٹ کرگئے۔

ٹرینڈنگ

مینو