سرینڈر نہیں کرسکتا: نوازشریف کی نظرثانی اپیل

محمد عثمان

نون لیگ کے قائد اور سابق وزیراعظم میاں محمد نوازشریف نے سرینڈر کرنے کے عدالتی حکم نامے پر نظرثانی درخواست دائر کر دی۔

نوازشریف کی جانب سے خواجہ حارث اور منور اقبال ایڈووکیٹ نے اسلام آباد ہائی کورٹ میں اپیل دائر کی۔ درخواست کے ساتھ میڈیکل رپورٹس بھی منسلک کی گئی ہیں، درخواست میں کہا گیا کہ فی الحال وطن آکر سرینڈر کرنا ممکن نہیں۔

درخواست میں بیان حلفی کا حوالہ دے کر موقف اختیار کیا گیا کہ اس میں طے کیا گیا تھا کہ حکومت پہلے نوازشریف کی صحت کا معلوم کرے گی لیکن اس سلسلے میں کوئی کوشش نہیں کی گئی۔ ڈاکٹروں نے فی الحال سفر کیلئے فٹ ہونے کا سرٹیفکیٹ نہیں دیا۔ درخواست گزار کی عدم موجودگی میں ان کے نمائندہ وکیل کو پیش ہونے کی اجازت دی جائے۔

اسلام آباد ہائی کورٹ کے 2 رکنی بنچ نے گزشتہ دنوں ایون فیلڈ، فلیگ شپ اور العزیزیہ ریفرنسز پر احتساب عدالتوں کے فیصلوں کے خلاف سماعت کی تھی، اسلام آباد ہائی کورٹ نے نواز شریف کو عدالت کے سامنے سرنڈر کرنے کیلئے 9 روز کی مہلت دی تھی۔ عدالت نے تحریری حکم میں کہا تھا کہ العزیزیہ ریفرنس میں نوازشریف کی ضمانت ختم ہوچکی ہے۔

ٹرینڈنگ

مینو