مقبوضہ کشمیر پاکستان کے نقشے کا حصہ

وفاقی کابینہ نے مملکت خداداد کے نئے نقشے کی منظوری دے دی، مقبوضہ کشمیر کو پاکستان کے نقشے کا حصہ بنادیا گیا ہے اور اب یہ نقشہ اقوام متحدہ میں پیش کیا جائے گا۔

وزیراعظم عمران خان نے نئے سیاسی نقشے کی تقریب رونمائی سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ یہ نقشہ کشمیر کو پاکستان کا حصہ بنانے کی جانب پہلا قدم ہے ، تمام کشمیری اور ملکی قیادت نے اس نقشے کی تائید کی اور اب یہی ملک کا سرکاری نقشہ ہوگا۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ بھارت نے 5 اگست 2019 کو ظلم کیا اور کشمیریوں سے ان کا قانونی حق چھین لیا، بھارت کشمیریوں کو ان کے ہی علاقے میں اقلیت بنانا چاہتا ہے۔

انھوں نے کہا کہ مسئلہ کشمیر صرف سلامتی کونسل کی قراردادوں کے تحت ہی حل ہوسکتا ہے، عالمی برداری نے کشمیریوں کا حق خودارادیت تسلیم کیا جو انھیں اب تک نہیں دیا گیا۔ انشا اللہ وہ ایک دن منزل حاصل کرلیں گے۔

وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ نقشے میں واضح ہے کہ سیاچن کل بھی پاکستان کا حصہ تھا اور آج بھی ہے۔

انھوں نے نقشے کی منظوری پر قوم کو مبارکباد دی اور بتایا کہ اس نقشے کے ذریعے سرکریک پر بھارتی دعوے کی بھی نفی کردی گئی ہے۔

ٹرینڈنگ

مینو