مسئلہ کشمیر عالمی عدالت میں اٹھایا جائے، خالد محمود

برطانیہ کے رکن پارلیمنٹ خالد محمود نے کہا ہے کہ مقبوضہ کشمیر کے عوام ایک سال سے نہیں 72 برسوں سے ڈریکونین مظالم کے شکار ہیں، اوآئی سی کا کم سے کم ایک ملک نریندرمودی کے خلاف عالمی عدالت انصاف کا دروازہ کٹھٹکائے اور اسے انصاف کے کٹہرے میں لائے۔

مقبوضہ کشمیر کی یکطرفہ حیثیت تبدیل کئے جانے کو ایک برس مکمل ہونے پر جاری ویڈیو پیغام میں برطانیہ کے 6 بار منتخب رکن پارلیمنٹ خالد محمود نے کہا کہ نریندر مودی کو انصاف کے کٹہرے میں لانے کیلئے بہت شواہد موجود ہیں، بس او آئی سی کے کسی ایک ملک کو آگے بڑھنا ہوگا۔

خالد محمود نے اوورسیز پاکستانیوں پر زور دیا کہ وہ اپنے اراکین پارلیمنٹ کو خط لکھیں اور ان سے مطالبہ کریں کہ وہ یہ معاملہ وزیراعظم بورس جانسن کے سامنے اٹھائیں۔

ایم پی خالد محمود نے کہا کہ بورس جانسن کی کنزریٹو حکومت بھارت سے بریگزٹ ڈیل کرنا چاہتی ہے اس لئے اسے انسانی حقوق کی یکسر پرواہ نہیں، یہ وقت ہے کہ برٹش پاکستانی تمام کمیونٹیز سے رابطے کریں اور ان سے بھی کہیں کہ کشمیریوں کیلئے اراکین پارلیمنٹ پر زور ڈالا جائے۔

اوآئی سی بھارت کے خلاف عالمی عدالت انصاف جائے، برطانوی رکن پارلیمنٹ

اوآئی سی بھارت کے خلاف عالمی عدالت انصاف جائے، برطانوی رکن پارلیمنٹ

Posted by Zabar News on Wednesday, August 5, 2020

خالد محمود کا کہنا تھاکہ کشمیرمیں اجتماعی زیادتیاں ہورہی ہیں، بورس جانسن حکومت پر واضح کرنا ہوگا کہ کشمیریوں کی زندگیاں اہم ہیں، ہم نے ان کیلئے وہ کچھ نہیں کیا جو ہمیں کرنا چاہیے تھا لیکن اب خاموش نہیں بیٹھیں گے۔

ٹرینڈنگ

مینو