جاپان: قلعہ اوساکا کھل گیا، ورچوئل ٹور ، ویڈیو

محسن رضا

جاپان کا شہر اوساکا تہذیب کی علامت ہے۔ اس کا اوساکا کاسل قدیم تاریخ خود میں سموئے ہوئے ہے۔

اوساکا قلعہ 262 ایکڑ پر پھیلے باغوں کے وسط میں واقع ہے۔ شہر کی جدید ترین اور بلند وبالا عمارتوں کے سامنے واقع یہ قلعہ ملک کی قدیم تہذیب وتمدن کا شاہ کار ہے۔

8 منزلہ یہ قلعہ 42 میٹر بلند ہے۔ اس کی عمارت 14 میٹر اونچی پتھریلی بنیاد پر بنائی گئی ہے۔

یہ قلعہ اندرونی اور بیرونی دونوں جانب سے خندقوں سے گھرا ہوا ہے۔ اس دور میں یہی خندقیں دشمن کو قلعہ تک پہنچنے سے روکتی تھیں۔

اپریل شروع ہوتے ہی قلعہ اوساکا کے باغوں میں چیری کے دلکش پھول کھلنے لگتے ہیں جو اس کے حسن کو چار چاند لگادیتے ہیں۔

3 ماہ سے کورونا وبا کے سبب قلعہ کے بالائی ٹاور پر جانے کی اجازت نہیں تھی۔ اس ہفتے اسے کھولا گیا تو لوگوں کی قطار لگ گئی۔

عملے نے لوگوں کا ٹمپریچر چیک کیا، نام اور پتے درج کئے تاکہ انفیکشن پھیلنے کی صورت میں انہیں خبردار کیا جاسکے۔

جاپان کے مشہور سورما اور سیاست داں تویوتومی ہیدیوشی نے اس قلعہ کو 1586 میں تعمیر کرایا تھا۔

اس دور میں یہ ملک کا سب سے بڑا اور اہم ترین قلعہ تصور کیا جاتا تھا۔ اسے کئی بار تاراج کیا گیا اور ہر بار تعمیر نو بھی ہوئی۔

سورما تویوتومی ہیدیویشی کی موت کے 2 برس بعد اس کی فوج کو حریف توکوگاوا ایاسو نے شکست دیدی تھی۔

سولہ سو میں ہوئی اس خونی جنگ کے نتیجے میں توکوگاوا کو پورے جاپان پر اقتدار حاصل ہوگیا تھا۔ جاپان کی تاریخ میں اسے  توکوگاوا شوگن اور ایڈو دور کہا جا تا ہے۔ جس میں تویوتومی قبلیہ صفہ ہستی سے مٹادیا گیا تھا۔

1868 کی جنگ بوشین میں اس قلعہ کو شاہ نواز فوجیوں نے تاراج کردیا تھا۔ 1931 میں جب تعمیر نوکی گئی تو اسے محض اسلحہ کے گودام کے طور پر استعمال کیا جاتا رہا۔

جنگ عظیم دوم میں امریکی فوج نے بھی اسے نشانہ بنایا تھا۔ امریکی حملوں سے اس کا بالائی ٹاور تباہ ہوگیا تھا۔ 1997 میں اسے پھر ہوبہو بنایا گیا۔ اس میں لفٹ بھی نصب کی گئی ۔ بعض حلقوں کے نزدیک اس سے عمارت میں بناوٹی پن آگیا ہے۔

شہر کے اس مشہور ترین مقام میں عجائب گھر ہے۔ جہاں اس دور سے متعلق 10 ہزار نوادرات رکھے گئے ہیں۔

قلعہ کی تیسری منزل پر نقل بمقابلہ اصل کی مانند مختلف چیزوں کے چھوٹے ماڈلز موجود ہیں۔

چوتھی منزل سنگوکو دور سے عبارت ہے۔ یہ وہ وقت تھا جب خونی جنگوں کے دوران مختلف جنگجو سورما جاپان پر قبضے کی کوششوں میں تھے۔

پانچویں منزل پر ویژول ڈسپلے کے ذریعے تاریخ کے جھروکوں میں جھانکنے کا موقع فراہم کیا جاتا ہے۔

آٹھویں منزل سے شہر کا دلفریب نظارہ دیکھنے کو ملتا ہے۔ یہاں اسٹیریو اسکوپ نانیوا فوکی نصب ہے ، اس سے دیکھا جاسکتا ہے کہ ماضی میں یہ شہر کیسا ہوا کرتا تھا۔ جاپانی شہریوں کیلئے یہاں آنا زندگی میں نئی روح پھونکنے کے مترادف ہے۔

قلعہ اوساکا کی سیر کو جانا ہوتو ایڑھی والے جوتوں کے بجائے آرام دہ اور جوگنگ کرنیوالے جوتے پہنیں، لمبی واک کیلئے ذہن کو تیار رکھیں کیونکہ یہ جنجگو کا مسکن ہے پھولوں کی سیج نہیں۔

ٹرینڈنگ

مینو