اسٹاک ایکسچینج حملے میں بھارت کا ہاتھ

محسن رضا

کراچی میں پاکستان اسٹاک ایکسچینج پر حملے کے تانے بانے بھارت سے مل گئے، کالعدم بی ایل اے نے ذمے داری قبول کرلی۔

ڈی جی رینجرز سندھ عمر بخاری نے ایڈیشنل آئی جی غلام نبی میمن کے ساتھ کراچی میں پریس کانفرنس کے دوران بتایا کہ یہ حملہ خفیہ ایجنسی کی مدد کے بغیر ممکن نہیں، کراچی کا امن بھارتی ایجنسی را کیلئے فرسٹریشن کا باعث تھا ، را کی بوکھلاہٹ آپ کے سامنے ہے، دہشت گردوں کی پشت پناہی میں را ملوث ہے۔ حملہ چینی قونصلیٹ سے ملتا جلتا ہے۔

انھوں نے کہا کہ معلوم ہے ملک دشمن ایجنسیاں بچے کچے دہشت گردوں کو پاکستان کے خلاف استعمال کرنے کی کوشش کر رہی ہیں، فورسز کو علم ہے کون کیا کررہا ہے، ان کے خلاف کام شروع کیا جاچکا ہے اور انہیں نیست و نابود کردیا جائے گا۔

عمر بخاری نے بتایا کہ دہشت گرد اسٹاک ایکسچینج کی عمارت میں داخل ہو کر لوگوں کو یرغمال بنانا چاہتے تھے، وہ لانچر ، گرینیڈ اور دیگر ہتھیار ساتھ لائے تھے، رینجرز ، پولیس اور اسٹاک ایکسچینج کے سیکیورٹی گارڈز نے داخلی راستے پر ہی تمام دہشت گردوں کو ہلاک کیا اور حملے کے باوجود اسٹاک ایکسچینج میں کام جاری رہا۔

ٹرینڈنگ

مینو