میوچل لیگل اسسٹنس کریمنل میٹرز بل منظور

پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس میں میوچل لیگل اسسٹنس کریمنل میٹرز ترمیمی بل 2020 منظور کرلیا گیا، نون لیگ اور پیپلزپارٹی نے بل پر ترامیم واپس لے لیں البتہ ایم ایم اے ، پی کے میپ اور نیشنل پارٹی نے بل کی مخالفت کی۔

وزیر قانون فروغ نسیم نے کلاز وائز بل منظوری کے لئے پیش کیا۔ نون لیگ اور پیپلزپارٹی نے بل کی حمایت جبکہ مجلس عمل، پشتونخوا ملی عوامی پارٹی اور نیشنل پارٹی نے مخالفت میں احتجاج کیا۔ یہ بل کثرت رائے سے منظور کیا گیا۔

وزیرقانون فروغ نسیم نے بتایا کہ میوچل لیگل اسسٹنس بل سیاسی نوعیت کے معاملات پر لاگو نہیں ہوگا، اگر کسی معاملے میں انسانی حقوق کے عالمی قوانین کی خلاف ورزی ہوئی تو اسے نامنظور کیا جاسکے گا۔ بل کے مطابق کسی شخص کی حوالگی پاکستانی اور عالمی انسانی حقوق کے خلاف ہوئی تو اسے حوالے نہیں کیا جا سکے گا۔ اس قانون کا مقصد فوجداری معاملات میں دیگر ممالک سے قانونی تعاون حاصل کرنا اور دیگر ممالک کو وہی قانونی معاونت دینا ہے۔

پارلیمنٹ کے اجلاس میں کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کی قرارداد متفقہ طور پر منظور کی گئی۔ قرارداد میں بھارتی اقدامات اور مظالم کی مذمت کی گئی ، عالمی برادری سے مظالم کا نوٹس لینے کا مطالبہ کیا گیا اور کہا گیا کہ حق خودارادیت کشمیریوں کا حق ہے۔

ٹرینڈنگ

مینو