دھرنے پر حملے کا فیصلہ بدلوایا، شجاعت

مسلم لیگ (قاف) کے صدر چوہدری شجاعت حسین نے انکشاف کیا ہے کہ کچھ لوگ اسلام آباد میں مولانا فضل الرحمان کے دھرنے پر دھاوا بولنے کے حامی تھے۔

چوہدری شجاعت نے ایک بیان میں بتایا کہ پرویز الہی نے عمران خان سے ملاقات کرکے مشورہ دیا تھا کہ اگر لڑائی ہوئی اور کوئی آدمی مارا گیا تو وزیراعظم کو ہر چیز کا جواب دینا پڑے گا۔ چوہدری پرویز الہی کے مشورے پر فیصلہ موخر کردیا گیا۔

صدر قاف لیگ نے بتایا کہ وہاں ایک طرف پولیس اور دوسری طرف مدرسوں کے طلبا تھے ، ایسے میں مولانا فضل الرحمان نے دور اندیشی کا ثبوت دیا۔ چوہدری شجاعت حسین نے عمران خان سے کہا کہ مسائل مشاورت سے حل کرنے کی کوشش کریں، ملک میں بحران کو ہر چیز بھول کر حل کرنے کی کوشش ہونی چاہئے۔

نوازشریف کا ذکر کرتے ہوئے انھوں نے بتایا کہ سابق وزیراعظم بغاوت کیس میں ملیحہ لودھی کی گرفتاری چاہتے تھے ، چوہدری شجاعت کا کہنا تھا کہ انھوں نے اس کی مخالفت کی،

ٹرینڈنگ

مینو