کپتان نے ہدایات نظر انداز کیں، حکام

پی آئی اے طیارہ حادثہ کیس میں سول ایوی ایشن اتھارٹی کی رپورٹ آگئی، رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ایئرٹریفک کنٹرولر لینڈنگ سے متعلق ہدایت دیتا رہا لیکن کپتان نے ان پر عمل نہیں کیا۔

ایڈیشنل ڈائریکٹر آپریشن افتخار احمد  نے پی آئی اے کے جی ایم سیفٹی ڈپارٹمنٹ کو خط لکھا ہے، اس میں کہا گیا ہے کہ کپتان نے ضابطوں کی خلاف ورزی کی۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ طیارہ کنٹرول زون اپروچ پوائنٹ پر تھا لیکن اس کی بلندی زیادہ تھی، اس پر کنٹرولر نے کیپٹن کو وارننگ دی، کنٹرولر نے بلندی پر کنٹرول کیلئے 2 بار ہدایات دیں جو کپتان نے نظر انداز کردیں، طیارہ 7 ناٹیکل میل پر تھا تو اس کی بلندی 5 ہزار 200 فٹ تھی ، طیارہ اترنے کی رفتار 250 ناٹ سے زیادہ تھی جو لینڈنگ کیلئے مطلوبہ رفتار سے زائد ہے۔

پی آئی اے کا طیارہ 22 مئی کو لاہور سے کراچی آرہا تھا اور ماڈل کالونی میں گر کر تباہ ہوگیا تھا، سانحے میں عملے کے 8 ارکان سمیت 97 مسافر جاں بحق ہوئے اور 2 مسافر معجزانہ طور پر مححفوظ رہے تھے۔

ٹرینڈنگ

مینو