طیارہ حادثہ: رپورٹ 22 جون کو پبلک ہوگی

عثمان خان

 وزیرہوا بازی غلام سرور خان نے طیارہ حادثے کی رپورٹ 22 جون کو پبلک کرنے کا وعدہ کرلیا۔

اسلام آباد میں پریس کانفرنس کے دوران غلام سرور خان نے بتایا کہ رپورٹ پارلیمنٹ میں بھی پیش کی جائے گی، 51 میتیں ڈی این اے کے بعد ورثا کے حوالے کی جاچکی ہیں، لواحقین کو 10 ، 10 لاکھ روپے دیئے گئے ہیں، حکومت متاثرہ مکانوں کے مالکان کی بھی مدد کرے گی۔

وفاقی وزیر نے بتایا کہ تحقیقات کے دوران اہم نکتہ یہ ہے کہ جہاز 3 بار رن وے سے ٹچ کرنے کے بعد دوبارہ اڑایا گیا، جہاز کس کے کہنے پر نیچے آیا اور پھر کس کے کہنے پر اڑایا گیا، یہ بھی جلد معلوم ہوجائے گا۔

غلام سرور کا کہنا تھا کہ فضائی حادثات کی رپورٹس بروقت منظر عام پر نہیں آتیں، حکومت تمام 12 واقعات کی رپورٹس پبلک کرے گی، حالیہ واقعے کا جو بھی ذمے دار ہوگا اسے منطقی انجام تک پہنچایا جائے گا۔

انھوں نے کہا کہ کسی کو بچانے یا پھنسانے کی کنفیوژن نہیں ہونی چاہئے، پائلٹ کے والدین یقین رکھیں شفاف انکوائری ہوگی۔ پی آئی اے میں 645 پائلٹس اور کئی افراد کی ڈگریاں جعلی تھیں، اس معاملے کو بھی گہری نظر سے دیکھ رہے ہیں۔

ٹرینڈنگ

مینو