حادثہ: پائلٹ اور ایئرٹریفک کنٹرولر ذمے دار

کراچی طیارہ حادثے کی عبوری تحقیقاتی رپورٹ وزیراعظم کو پیش کردی گئی، اس میں پائلٹ اور ایئر ٹریفک کنٹرولر کو حادثے کا ذمے دار قرار دیا گیا ہے۔

وزیر ہوا بازی غلام سرور خان نے یہ رپورٹ وزیراعظم عمران خان کو پیش کی اور بریفنگ دی، وزیراعظم نے کہا کہ یہ رپورٹ قومی اسمبلی میں پیش کی جائے۔ ایئر کرافٹ ایکسیڈنٹ اینڈ انویسٹی گیشن بورڈ کی اس عبوری رپورٹ میں کپتان کا ڈیوٹی روسٹر اور ایٹر کٹرولر سے گفتگو بھی شامل ہے۔

رپورٹ کے مطابق قومی ایئرلائن اور سی اے اے کا طریقہ کار حادثات کی روک تھام میں ناکام رہا، حادثے کے وجوہات میں طیارے کی فنی خرابی کو خارج از امکان قرار نہیں دیا جاسکتا، رپورٹ میں کاک پٹ کریو اور ایئر ٹریفک کنٹرولر کو بھی ذمے دار قرار دیتے ہوئے کہا گیا کہ کریو نے لینڈنگ کے وقت ایئرٹریفک کنٹرولر کی ہدایات پر عمل نہیں کیا جبکہ ایئرٹریفک کنٹرولر بھی اپنی ہدایات پر عمل نہیں کراسکا۔

22 مئی کو لاہور سے کراچی آنے والا طیارہ کراچی کی ماڈل کالونی میں گر کر تباہ ہوا تھا ، واقعے میں 97 افراد جاں بحق ہوئے اور صرف 2 محفوظ رہے تھے۔

ٹرینڈنگ

مینو