کورونا زبردستی پھیلایا گیا، ذمے دار وفاق

چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ ملک میں کورونا وائرس زبردستی پھیلایا گیا جس کی ذمے دار وفاقی حکومت ہے۔ حکومت نے کورونا وائرس کے معاملے پر ڈاکٹروں ، نرسوں اور عوام کو لاوارث چھوڑ دیا ، ملک میں روزانہ اموات کی شرح چین اور بھارت سے زیادہ ہے، جنگی صورتحال ہے اور وفاقی حکومت اعدادوشمار کے کھیل سے عوام کو بے وقوف بنارہی ہے۔

کراچی میں پریس کانفرنس کے دوران بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ عوام کو غلط معلومات دینے والوں کے خلاف ایف آئی آر کاٹنی چاہئے۔ وفاقی حکومت اپنا رویہ درست کرے ، ہماری بات نہ مانیں مگر ان کی تو مانیں جو فرنٹ لائن پر لڑ رہے ہیں، اپنی زندگیاں خطرے میں ڈالنے والوں کی تو بات سنی جائے۔

بلاول بھٹو نے وفاقی حکومت پر وبا روکنے کیلئے سندھ حکومت کی کوششوں کو سبوتاژ کرنے کا الزام لگایا اور کہا کہ اب ہم نہ کورونا سے بچیں گے نہ معاشی بحران سے ، کورونا کے خلاف لاک ڈاون صرف ایک ہتھیار ہے ، سندھ حکومت کے پاس مقامی یا وسیع سطح پر لاک ڈاؤن کے آپشن موجود ہیں۔

چیئرمین پیپلزپارٹی نے پاکستان اسٹیل کے ملازمین کی حمایت کرتے ہوئے سوال کیا کہ کس قانون کے تحت 10 ہزار مزدوروں کو بے روزگار کیا جارہا ہے ، پیپلزپارٹی یہ معاملہ ہر فورم پر اٹھائے گی۔

انھوں نے ٹڈی دل کے معاملے پر بھی وفاقی کو تنقید کا نشانہ بنایا اور کہا کہ اب تک اسپرے شروع نہیں کیا گیا، بلاول کا کہنا تھا کہ این ایف سی ایوارڈ کی تشکیل نو کے معاملے پر اے پی سی بلائی جائے گی۔

پی آئی اے طیارہ حادثے سے متعلق سوال پر بلاول بھٹو نے کہا کہ پائلٹ کی کردار کشی قابل مذمت ہے، سازش کے تحت پی آئی اے پر توجہ نہیں دی جارہی ، وزیراعظم عجیب انسان ہیں ، ملک کو کب تک اس نالائقی کا بوجھ اٹھانا پڑے گا۔ چیئرمین پیپلزپارٹی نے بتایا کہ سندھ حکومت بجٹ میں رسک الاؤنس دے گی جبکہ غریبوں اور چھوٹے کاروبار کو ریلیف پہنچانے کی کوشش بھی کی جارہی ہے، پیپلزپارٹی آزادی صحافت کی حمایت کرتی ہے اور صحافیوں سے زیادتیاں برداشت نہیں کی جائیں گی، عزیز میمن کے معاملے پر تمام ذمے داروں کی گرفتاری تک مطمئن نہیں ہوں گے۔

ٹرینڈنگ

مینو