کورونا کا پھیلاؤ، ذمے دار سرکار، ڈاکٹر

پاکستانی امریکن ڈاکٹر سلمان نقوی نے کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو حکومت اقدامات کا نتیجہ قرار دیا ہے، زبرنیوز سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ جب کورونا وائرس پھیل رہا تھا تو پابندیاں نرم کردی گئیں ، یہ حکومت کی نااہلی ہے۔ اب اگر حکومت وبا پر قابو پانا چاہتی ہے تو بہت زیادہ پابندیاں لگانی پڑیں گی اور سخت اقدامات نہ کئے گئے تو بہت زیادہ جانیں ضائع ہوں گی۔

ڈاکٹر سلمان نقوی نے صورتحال تبدیل نہ ہونے پر کیسز بڑھنے کی وارننگ دی جبکہ لوگوں کو سماجی فاصلہ برقرار رکھنے ، ماسک پہننے اور بار بار ہاتھ دھونے کا مشورہ دیا۔

ڈاکٹر سلمان نقوی پلمونولوجی کے شعبے میں 25 سال کا تجربہ رکھتے ہیں۔ وہ کیلی فورنیا کے علاقے ویسٹ منسٹر میں واقع کنڈریڈ اسپتال کے چیف آف اسٹاف رہ چکے ہیں اور اب نیوپورٹ بیچ کے ہوگ اسپتال میں پلومونری ڈویژن کے سربراہ ہیں۔

ڈاکٹر سلمان نقوی کو ان کی خدمات کے صلے میں رابرٹ مک کیفری ایم ڈی ایوارڈ سے نوازا جا چکا ہے۔ امریکن کالج آف چیسٹ فزیشنز نے انہیں ماسٹر ایف سی سی پی ہیومینیٹرین ایوارڈ سے بھی نواز تھا جبکہ کینیڈا پاکستان بزنس کونسل ٹورانٹو انہیں ہیومینٹرین آف دی ایئر کا اعزاز دے چکی ہے۔ ڈاکٹر سلمان ان دنوں امریکا میں کورونا مریضوں کا علاج کرنے میں مصروف ہیں۔

ڈاکٹر سلمان نقوی شائن ہیومینیٹی کے کو فاونڈر ہیں، یہ تنظیم ڈھائی لاکھ سرجیکل ماسک صوبہ سندھ اور 30 ہزار انڈس ہاسپٹل کو عطیہ کرچکی ہے۔

شائن ہیومینیٹی نے یہ تھری پلائی ماسک بیشون فارما سے خریدے تھے۔ ہر باکس میں 50 سرجیکل ماسک رکھ کر 5 ہزار ڈبے تیار کئے گئے تھے۔

شائن ہیومینٹی 27 سو سے زائد ڈاکٹروں ، میڈیکل اسٹوڈنٹس ، نرسوں اور نرسنگ اسٹوڈنٹس پر مشتمل ہے۔ صرف پچھلے سال اس تنظیم سے وابستہ عملے نے ایک لاکھ مریضوں کا 6 سینٹرز میں معائنہ کیا تھا۔

ٹرینڈنگ

مینو