کراچی پر قبضے کی سازش نامنظور، پیپلزپارٹی

کراچی کو وفاقی حکومت کے حوالے کی تجویز اور اٹھارویں ترمیم پر مبینہ حملے کی کوشش کے خلاف پیپلزپارٹی نے شہر شہر ریلیاں نکالیں۔

سندھ کے چھوٹے بڑے شہروں میں جیالے سڑکوں پر نکل آئے اور شہر قائد کو وفاق کے حوالے کرنے کی تجویز مسترد کردی ، جگہ جگہ احتجاج کیا گیا اور رہنماوں نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کراچی پر وفاق کا قبضہ قبول نہیں کیا جائے گا، کراچی سندھ ہے اور سندھ کی دھڑکن کراچی ہے۔

حیدرآباد میں بڑی ریلی نکالی گئی، جیالوں نے کراچی کو وفاق کے حوالے کرنے کی تجویز کو سندھ پر حملہ قرار دیا اور مرسوں مرسوں سندھ نہ ڈے سوں کے نعرے لگائے۔

جیالوں نے کشمور ہائی وے کو دھرنا دے کر ٹریفک کیلئے بلاک کردیا، کراچی ، حیدرآباد، نواب شاہ ، سکھر، تھرپارکر ، خیرپور ، دادو ، اوباڑو، ٹنڈو محمد خان، لاڑکانہ ، جیکب آباد، میرپورخاص اور دیگر شہروں میں بھی احتجاج کیا گیا۔

پیپلزپارٹی کے کارکنوں اور رہنماوں نے اسلام آباد میں پریس کلب کے باہر احتجاج کیا، پارٹی رہنما ڈاکٹر نفیسہ شاہ اور عاجز دھامرا نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سندھ نے پاکستان بنایا تھا اور بچانے والا بھی سندھ ہے، سندھ یا وفاق کے خلاف سازش برداشت نہیں کی جائے گی اور کسی کو سندھ تقسیم کرنے نہیں دیا جائے گا۔

یہ احتجاج وزیراعظم عمران خان سمیت حکومتی رہنماؤں کے ان بیانات کے بعد کیا جارہا ہے جن میں کہا گیا تھا کہ بہت جلد کراچی سے متعلق اہم فیصلے کئے جائیں گے ، اٹارنی جنرل خالد جاوید خان نے بھی گزشتہ دنوں سپریم کورٹ کو بتایا تھا کہ وفاقی حکومت کراچی سے متعلق آئینی اور قانونی پہلوؤں پر سنجیدگی کے ساتھ غور کر رہی ہے۔

ٹرینڈنگ

مینو