امریکا میں ٹک ٹاک پر پابندی کا امکان

امریکا میں سوشل میڈیا ایپ ٹک ٹاک پر پابندی کا امکان بڑھ گیا، صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا ہے کہ وہ پابندی کے بارے میں سوچ رہے ہیں کیونکہ چین اس ایپ کو امریکی شہریوں کی جاسوسی کیلئے استعمال کرسکتا ہے۔

وائٹ ہاوس میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے صدر ٹرمپ نے بتایا کہ وہ حتمی فیصلے کیلئے سوچ بچار کر رہے ہیں۔

وزیرخزانہ اسٹیون منوچن کا کہنا ہے کہ غیرملکی سرمایہ کاری سے متعلق کمیٹی  ایپ کا جائزہ لے رہی ہے، وہ ٹک ٹاک کے معاملے پر اسی ہفتے صدر ٹرمپ کو سفارشات پیش کردیں گے۔

اس سے پہلے ڈیموکریٹ صدارتی امیدوار جوبائیڈن کی مہم میں شامل افراد کیلئے یہ ویڈیو شیئرنگ ایپ استعمال کرنے پر پابندی لگائی جاچکی ہے، اس اقدام کا مقصد بھی سیکیورٹی اور پرائیویسی سے متعلق خدشات تھے۔

امریکا میں پابندی ٹک ٹاک انتظامیہ کیلئے بڑا دھچکا ثابت ہوسکتی ہے کیونکہ دیگر ممالک کی جانب سے بھی اس اقدام کی پیروی کا امکان بڑھ جائے گا۔ ٹک ٹاک کے اس وقت دنیا بھر میں تقریبا ایک ارب صارفین ہیں اور اس کی انتظامیہ چینی حکومت سے اپنے تعلق کی تردید کرتی رہی ہے۔

ٹرینڈنگ

مینو