فلم کیلئے کیا کرنا پڑتا ہے؟ روینا ٹنڈن بول پڑیں

کنگنا رناوت کے بعد بالی وڈ اداکارہ روینا ٹنڈن نے بھی بھارتی فلم نگری کی حقیقت بے نقاب کردی، کہتی ہیں انھیں مرد اداکاروں کی خواہشات پوری نہ کرنے پر تنقید کا نشانہ بنایا جاتا رہا ہے۔

کنگنا رناوت کے بعد ایک اور اداکارہ نے زبان کھول دی، روینا ٹنڈن نے ایک انٹرویو میں بتایا کہ بولی ووڈ انڈسٹری مردوں کے زیراثر ہے، انڈسٹری میں ان کا کوئی گارڈ فادر نہیں، وہ کسی کیمپ کا حصہ بنیں نہ کسی اداکار نے انھیں پروموٹ کیا۔

روینا ٹنڈن نے بتایا کہ 90 کی دہائی میں وہ عروج پر تھیں، مصروفیت کے باعث جب وہ کسی فلم کی آفر ٹھکراتیں تو انھیں مغرور کہا جاتا، انھوں نے کبھی وہ نہیں کیا جو مرد اداکار چاہتے تھے۔

اداکارہ نے بتایا کہ مرد اداکار چاہتے تھے دن رات ان کے ساتھ رہا جائے، انھوں نے فلموں میں کردار کیلئے کسی کی خواہش پوری نہیں کی، مردوں کی انا کو چوٹ پہنچتی تو کٹھ پتلی خواتین صحافی ان کے خلاف لکھتیں اور انھیں تنقید کا نشانہ بنایا جاتا۔

روینا ٹنڈن نے بتایا کہ دیگر خواتین ایکٹرز کے ساتھ بھی ایسا ہی کیا جاتا تھا۔

ٹرینڈنگ

مینو