امریکی بلاگر کے الزامات مسترد

امریکی بلاگر سنتھیارچی نے پیپلزپارٹی رہنماؤں کے خلاف زیادتی اور دست درازی کے الزامات لگا کر بڑا محاذ کھول دیا ، سابق وزیرداخلہ رحمان ملک اور سابق وزیراعظم یوسف رضا گیلانی اور سابق وفاقی وزیر مخدوم شہاب الدین نے امریکی شہری کے الزامات کو بے بنیاد قرار دے کر مسترد کردیا ہے۔

سنتھیا رچی نے رحمن ملک پر زیادتی کا الزام لگایا تھا ، اب پیپلزپارٹی کے رہنما رحمان ملک کے ترجمان نے الزامات کو من گھڑت اور بے ہودہ قرار دیا، انھوں نے کہا کہ یہ الزامات کسی کے اکسانے پر لگائے گئے ہیں، اس کا مقصد سابق وزیر داخلہ کی ساکھ کو نقصان پہنچانا ہے۔

سابق وزیراعظم یوسف رضا گیلانی کا ردعمل بھی آگیا، انھوں نے کہا کہ خاتون نے شہید بینظیر بھٹو پر الزامات لگائے ، کوئی بھی یہ برداشت نہیں کرسکتا، پیپلزپارٹی کے رہنما نے پوچھا کہ کیا وزیراعظم ایوان صدر میں ایسی حرکت کرسکتا ہے ؟ خاتون ایوان صدر میں کیا کر رہی تھیں ؟ یوسف رضا گیلانی نے کہا کہ امریکی خاتون کو یہ بات کرتے ہوئے شرم آنی چاہئے۔

مخدوم شہاب الدین نے کہا کہ امریکی خاتون سستی شہرت کیلئے ایسے بے بنیاد الزامات لگارہی ہیں، سنتھیارچی نے مارنے پیٹنے کا الزام لگایا جو غلط ہے، وہ ایسا سوچ بھی نہیں سکتے، امریکی خاتون بتائیں وہ 20 سال خاموش کیوں رہیں؟

سنتھیارچی نے فیس بک پر اپنا تفصیلی بیان جاری کیا تھا ، انھوں نے رحمان ملک پر 2011 میں زیادتی کا نشانہ بنانے جبکہ یوسف رضا گیلانی اور مخدوم شہباب الدین پر دست درازی کے الزامات لگائے تھے۔

امریکی بلاگر کا دعویٰ ہے کہ ان کے پاس ثبوت موجود ہیں جو وقت آنے پر پیش کئے جائیں گے، انھیں دھمکیاں دی جارہی ہیں اور وہ گزشتہ ہفتے ایف آئی اے میں رپورٹ درج کراچکی ہیں۔

سنتھیارچی شہید بے نظیر بھٹو اور آصف زرداری کی نجی زندگی سے متعلق بھی قابل اعتراض ٹوئٹس کرتی رہی ہیں، پیپلزپارٹی نے مئی میں ان کے خلاف ایف آئی اے کو درخواست دی تھی اور فوری کارروائی پر زور دیا تھا۔

ٹرینڈنگ

مینو