سندھ کے جزائر ، وفاق کو دی گئی اجازت واپس

محسن رضا، محمد عثمان

سندھ حکومت نے وفاقی حکومت کو دی گئی جزائر پر کام کی مشروط اجازت کا حکم واپس لے لیا۔ پی ٹی آئی کا کہنا ہے کہ صوبائی حکومت جزائر پر منفی پروپیگنڈا اور صوبے کے خلاف سازش بند کرے۔

صوبائی حکومت نے سندھ کے جزائر اور ساحلوں سے متعلق اقدامات پر وفاق کو احتجاجی مراسلہ بھیج دیا، اس میں کہا گیا ہے کہ وفاق سے جاری پاکستان آئی لینڈ اتھارٹی کا قیام اور آرڈیننس کا اجرا غیر آئینی اور غیرقانونی ہے جبکہ اس اقدام سے طے کی گئی شرائط کی بھی خلاف ورزی کی گئی ہے۔

سندھ حکومت کا موقف ہے کہ آرڈیننس کے ذریعے سندھ کے جزائر کی ملکیت تبدیل کرنے کی کوشش کی گئی، سندھ حکومت نے جزائر کی ترقی کیلئے وفاقی حکومت کو مشروط اجازت دی تھی اب اس کی توثیق نہیں ہوگی اور وفاقی حکومت ان جزائر میں نئے شہر بسانے کا کام نہیں کرسکے گی۔ پیپلزپارٹی کی رکن قومی اسمبلی شازیہ مری نے وفاقی حکومت کا آرڈیننس مسترد کرانے کیلئے قومی اسمبلی میں قرارداد بھی جمع کرادی ہے۔

وفاقی وزیر شبلی فراز نے کراچی میں صحافیوں سے گفتگو کے دوران کہا کہ صوبائی حکومت جزیروں کے معاملے کو سیاسی بنارہی ہے،  وفاق نے کوئی غیر آئینی اقدام نہیں کیا، جزائر میں صنعتوں کے قیام کے حق میں ہیں۔ سندھ حکومت نہ خود کام کرتی ہے نہ دوسروں کو کرنے دیتی ہے۔

تحریک انصاف کراچی کے ترجمان جمال صدیقی کہتے ہیں پیپلزپارٹی نے 2012 میں جزائر کیلئے اشتہار دیا تھا، اب منفی پروپیگنڈہ اور سندھ دشمنی بند کی جائے۔

ٹرینڈنگ

مینو