چینی بحران: ریفرنس نیب کو ارسال

وزیراعطم کے معاؤن خصوصی برائے احتساب شہزاد اکبر نے کہا ہے کہ وزیراعظم عمران خان نے شوگر کمیشن کی سفارشات منظور کرلی ہیں، اسکینڈل میں ملوث افراد کے خلاف فوجداری قوانین کے تحت مقدمات درج کئے جائیں گے۔

اسلام آباد میں پریس کانفرنس کے دوران شہزاد اکبر نے بتایا کہ 5 سال کے دوران دی گئی 29 ارب روپے کی سبسڈی کا جائزہ لیا گیا ، اس عرصے میں سبسڈی قواعد و ضوابط سے ہٹ کر دی گئی تھی ، اس معاملے پر نیب کارروائی کرے گا اور رقم کی ریکوری کی جائے گی۔

انھوں نے کہا کہ شوگر مافیا بہت مضبوط ہے اس کی پہنچ اداروں کے اندر تک ہے ، سفارشات کی روشنی میں ایکشن پلان تیار کرلیا گیا ہے، چینی اسکینڈل میں کچھ لوگوں کو نامزد کیا گیا ہے ، نامزد افراد سے متعلق کارروائی کیلئے متعلقہ اداروں کو ہدایات دے دی گئی ہیں، کارروائی کیلئے نیب کو پہلا ریفرنس بھیج دیا گیا ہے۔

شہزاد اکبر نے بتایا کہ احتساب آرڈیننس کے سیکشن 9 کے تحت سبسڈی کے معاملے پر کارروائی کی جائے گی۔ پینل ایکشن کا معاملہ کارروائی کیلئے صوبوں کو دیا جارہا ہے۔ اعلان شدہ مقدار سے زیادہ گنا کریش کیا جارہا ہے جس کا ٹیکس بھی نہیں دیا جارہا۔ شوگر ملز مالکان اور ایسوسی ایشن نے درخواست بہت دیر میں دائر کی ، کمیشن پہلے ہی کام کرچکا ہے۔

معاون خصوصی کا مزید کہنا تھا کہ چینی کمیشن کے معاملے پر وزیراعظم کو دھمکی دی گئی، کس طرح دھمکیاں دی گئیں عدالت نے کہا تو سب سامنے لائیں گے۔ یاد رہے کہ رپورٹ آنے کے بعد بڑی شوگر مل کے مالک جہانگیر ترین علاج کیلئے لندن جاچکے ہیں جبکہ شوگر ملز ایسوسی ایشن نے کمیشن کی رپورٹ اسلام آباد ہائی کورٹ میں چیلنج کردی ہے۔

ٹرینڈنگ

مینو