196 مجرموں کی رہائی کا حکم معطل

وقار خان

سپریم کورٹ نے فوجی عدالتوں سے سزا یافتہ 196 مجرموں کی رہائی کا حکم معطل کرکے مقدمات کی تفصیلات مانگ لیں۔

جسٹس مشیر عالم کی سربراہی میں 3 رکنی بنچ نے مجرموں کی رہائی سے متعلق پشاور ہائیکورٹ کے فیصلے کے خلاف درخواستوں پر سماعت کی۔ عدالت نے پوچھا کیا مجرم جیلوں میں ہیں ، ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے بتایا کہ مجرموں کو رہا نہیں کیا گیا ، انھوں نے پشاور ہائی کورٹ کا حکم معطل کرنے کی بھی اپیل کی۔

عدالت نے فریقین کو آئندہ جمعہ کیلئے نوٹس جاری کردیا۔ جسٹس قاضی امین نے کہا کہ فوجی عدالتوں سے مقدمے کے بعد سزا ہوئی، ہر کیس کے اپنے شواہد اور حقائق ہیں۔

پشاور ہائی کورٹ نے فوجی عدالتوں سے مجرم قرار دیئے گئے 200 افراد کی سزا کالعدم قرار دے کر رہائی کا حکم دیا تھا۔ چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ جسٹس وقار احمد سیٹھ اور جسٹس نعیم انور نے فیصلہ سنایا تھا ، عدالت نے کہا تھا کہ ملزمان کو اعترافی بیانات پر سزا ہوئی اور شفاف ٹرائل کا موقع نہیں دیا گیا۔

پشاور ہائی کورٹ سے بری کئے گئے 200 افراد کو دہشت گردی کے الزامات پر فوجی عدالتوں نے سزائیں سنائی تھیں ، ان افراد نے سزاؤں کے خلاف پشاور ہائی کورٹ میں اپیل دائر کرکے معافی کی درخواست کی گئی تھی۔

ٹرینڈنگ

مینو