موت کا پہیہ ، جان خطرے میں ، ویڈیو

دنیا بھر میں تو سرکس پرفارمنس بند ہیں مگر موت کے پہیے میں ایک کرتب دکھانے والا ایسا ہے جس نے کورونا لاک ڈاون کے دور میں ایسی کلاکاری دکھائی ہے کہ سوشل میڈیا ہی نہیں دنیا بھر کے میڈیا کی زینت بن گیا۔ گھر بیٹھے لوگ اس کی ویڈیو دیکھ کر دنگ ہیں۔

بلیک سوٹ پر بو لگائے رامون کیتھرائنر نے سوئس ایلپس پر موت کا پہیہ نصب کرکے 30 فٹ بلندی پر ایسی واک کی کہ جس نے دیکھا داد دیئے بغیر نہ رہ سکا۔

دھات کا بنا ہوا یہ پینڈولم جیسے جیسے گھومتا گیا، رامون کا اسٹائل بھی بدلتا رہا اور ایک وقت ایسا آیا کہ وہ موت کے پہیے کے باہر نکل آیا۔

رامون نے جب کوٹ اتار کر موت کے پہیے پر اچھل کود شروع کی تو کیمرے میں یہ سین رکارڈ کرنے والے کی بھی ایک لمحے کیلئے جان نکل گئی۔

پرفارمنس کا مقصد انٹرٹینمنٹ انڈسٹری سے وابستہ ان افراد کو خراج تحسین پیش کرنا تھا جو کورونا وبا کے سبب لاک ڈاون کا شکار ہیں اور پرفارم نہیں کر پا رہے۔

رامون کا تعلق سوئٹزرلینڈ اور آسٹریلیا سے تعلق رکھنے والی ایسی فیملی سے ہے جس کی ساتویں نسل بھی سرکس سے وابستہ ہے۔ وہ اس سے پہلے اونچی تار پر واک کرچکا ہے ، موٹر بائیک چلا چکا ہے اور گھومنے والے پول پر بھی کرتب دکھا چکا ہے۔

سوئس ایکروبیٹ فریڈی نوک نے بھی اس روز فن کا مظاہرہ کیا۔ اس نے 3 ہزار میٹر بلند تار پر آنکھیں بند کرکے واک کی اور بائیسکل چلائی۔ اس نے 40 میٹر بلندی اور 39.1 ڈگری ڈھلوان پر 367 میٹر تک بائیک چلا کر رکارڈ توڑا۔ فریڈی نوک نے آنکھوں پر پٹی باندھ کر اسی کیبل پر 151 اعشاریہ ایک میٹر تک واک کرکے بھی رکارڈ بریک  کیا۔ اٹلی سے تعلق رکھنے والی پول ڈانسر شیلا نیکولوڈی نے بھی اس موقع پر فن کا مظاہرہ کیا۔

ٹرینڈنگ

مینو