عمران فاروق قتل کیس، 3 ملزمان کو عمر قید

محمد عثمان

اسلام آباد کی خصوصی عدالت نے متحدہ قومی موومنٹ کے رہنما ڈاکٹر عمران فارق قتل کیس کے 3 ملزمان کو عمر قید کی سزا سنادی۔ عدالت نے اپنے تفصیلی فیصلے میں لکھاہے کہ ثابت ہوگیا قتل کا حکم متحدہ بانی نے دیا تھا۔

انسداد دہشت گردی کی عدالت نے متحدہ کے 3 کارکنوں خالد شمیم ، محسن علی اور معظم علی کو عمر قید کی سزا سنائی جبکہ ملزم الطاف حسین، افتخار حسین ، محمد انور اور کاشف کامران کے دائمی وارنٹ جاری کئے ہیں۔

عدالتی حکم میں کہا گیا کہ مجرموں پر قتل ، قتل کی سازش ،تعاون اور سہولت کاری ثابت ہوگئی، قتل کا حکم متحدہ بانی نے دیا جسے متحدہ لندن کے 2 رہنماؤں نے پاکستان پہنچایا، معظم علی نے نائن زیرو سے قتل کیلئے محسن علی اور کاشف کامران کو منتخب کیا، عدالت نے عمران فاروق کے ورثا کو 10 ، 10 لاکھ روپے دینے کا بھی حکم دیا۔

متحدہ کے رہنما عمران فاروق 16 ستمبر 2010 کو برطانیہ میں گھر کے باہر قتل کئے گئے تھے، برطانوی حکام نے ملزمان کو سزائے موت نہ دینے کی شرط پر اہم شواہد فراہم کئے جبکہ مقتول کی اہلیہ اور برطانوی گواہان کے بیانات ویڈیو لنک سے ریکارڈ کئے گئے۔

ٹرینڈنگ

مینو