توشہ خانہ ریفرنس: نواز شریف اشتہاری قرار

محمد عثمان

احتساب عدالت نے توشہ خانہ ریفرنس میں سابق صدر آصف زرداری اور سابق وزیراعظم یوسف رضا گیلانی پر فرد جرم عائد کردی جبکہ نون لیگ کے قائد نوازشریف کو اشتہاری قرار دے دیا۔

توشہ خانہ ریفرنس کی سماعت راولپنڈی کی احتساب عدالت میں ہوئی۔ جج اعظم خان نے آصف زرداری اور یوسف رضا گیلانی پر فرد جرم عائد کرتے ہوئے آصف زرداری کے وکیل فاروق ایچ نائیک سے کہا کہ آپ نے چارج شیٹ پڑھنی ہے تو پڑھ لیں۔

عدالت کو بتایا گیا کہ آصف زرداری اور یوسف رضا گیلانی نے صحت جرم سے انکار کیا ہے،  یوسف رضا گیلانی کے وکیل نے بتایا کہ وزیراعظم کے پاس اختیار ہوتا ہے کہ سمری کی منظوری دے، اختیارات کے غلط استعمال کا نیب ریفرنس درست نہیں۔ یوسف رضا گیلانی نے عدالت کو بتایا کہ انھوں نے کبھی قوانین کی خلاف ورزی نہیں کی، قانون کے مطابق سمری منظور کی، اگر سمری غلط ہوتی تو انھیں بھیجی ہی نہ جاتی۔

عدالت نے سابق وزیراعظم نوازشریف کو اشتہاری قرار دیا اور ان کے دائمی وارنٹ گرفتاری جاری کردیئے، عدالت نے نوازشریف کی جائیداد سے متعلق تفصیلات بھی 7 دن میں فراہم کرنے کا حکم دے دیا۔ توشہ خانہ ریفرنس میں ہی عبدالغنی مجید اور انور مجید پر بھی فرد جرم عائد کی گئی اور دونوں ملزمان نے صحت جرم سے انکار کیا۔ بعد میں کیس کی سماعت 24 ستمبر تک ملتوی کردی گئی۔

صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے سابق صدر آصف زرداری نے کہا کہ وہ اس بار بھی سرخرو ہوں گے، نوازشریف سے متعلق سوال پر انھوں نے کہا کہ نون لیگ کے قائد خود ذمے دار ہیں، اس طرح تو ہوتا ہے اس طرح کے کاموں میں۔

ٹرینڈنگ

مینو