نواز شریف اور مریم کے خلاف غداری کا مقدمہ

نون لیگ کے قائد اور سابق وزیراعظم میاں محمد نواز شریف ، مریم نواز اور دیگر پارٹی رہنماوں کے خلاف غداری کا مقدمہ درج کرلیا گیا ہے۔

لاہور کے تھانہ شاہدرہ میں شہری بدر رشید نے پاکستان پینل کوڈ کی مجرمانہ سازش کی دفعات کے تحت درج کرایا ہے، ایف آئی آر میں 120 اے اور 121 اے اور بی ، 123 اے اور بی ، 124 اے اور بی و دیگر دفعات لگائی گئی ہیں۔ مقدمے میں 40 سے زائد نون لیگی رہنماؤں کو نامزد کیا گیا ہے۔

مقدمے میں نواز شریف کے ساتھ جن رہنماوں کو نامزد کیا گیا ان میں نون لیگ کی نائب صدر مریم نواز ، سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی ، سابق اسپیکر ایاز صادق ، راجہ ظفر الحق ، خرم دستگیر  ، اقبال ظفر جھگڑا ، احسن اقبال ، پرویز رشید ، رانا ثناءاللہ ، محمد زبیر ، مفتاح اسماعیل، مریم اورنگزیب ، عطااللہ تارڑ ، برجیس طاہر ، عظمیٰ بخاری، شائستہ پرویز، سائرہ افضل تارڑ اور دانیال عزیز شامل ہیں۔

ایف آئی آر کے مطابق نواز شریف نے لندن میں پاکستان کے مقتدر اداروں کو بدنام کرنے کیلئے اشتعال انگیز تقاریر کیں، تقاریر میں بھارتی پالیسی کی تائید کی گئی جبکہ ان کا مقصد بھارتی افواج کے مقبوضہ کشمیر پر قبضے اور کشمیریوں پر مظالم سے توجہ ہٹانا ہے۔ مریم نواز اور دیگر رہنماؤں نے نواز شریف کی تقاریر کی تائید کی ، یہ اقدام قانون کی گرفت میں آتا ہے۔

بدر رشید کے مطابق نواز شریف کی تقاریر کا مقصد اپنے دوست اور بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کو فائدہ پہنچانا ، عالمی برادری میں پاکستان کی اعلیٰ عدالتوں اور مسلح افواج کو بدنام کرنا ہے۔ ملکی قوانین کسی سزا یافتہ مجرم کو اپنی ضمانت کا ناجائز فائدہ اٹھانے کی اجازت نہیں دیتے، پاکستانی قوانین اجازت نہیں دیتے کہ الیکٹرانک اور سوشل میڈیا کے ذریعے پاکستانی عوام کو فوج اور حکومت کے خلاف بغاوت پر اکسایا جائے۔

دوسری طرف چیف جسٹس اسلام آباد ہائی کورٹ جسٹس اطہر من اللہ نے  نواز شریف کی تقاریر پر پابندی کی درخواست قابل سماعت ہونے پر فیصلہ محفوظ کرلیا۔ درخواست گزار نے مؤقف اختیار کیا تھا کہ نواز شریف نے اپنی 20 ستمبر کی تقریر میں ریاستی اداروں کو بدنام کرنے کی کوشش کی۔

چیف جسٹس اسلام آباد ہائی کورٹ نے درخواست گزار کے وکیل سے پوچھا کہ آپ کے موکل کا کون سا بنیادی حق متاثر ہوا ؟ سیکورٹی ادارے اور پارلیمنٹ ہے ، عدالت کو سیاسی نوعیت کے معاملات میں کیوں ملوث کرنا چاہتے ہیں ؟ جب پیمرا نے نوٹس بھیج دیا تو آپ یہاں کیوں آگئے۔

اس سے پہلے گزشتہ روز نواز شریف کے داماد کیپٹن (ر) صفدر کے خلاف بھی گوجرانوالہ میں بغاوت کا مقدمہ درج کیا گیا تھا۔

ٹرینڈنگ

مینو