امریکا: پورٹ لینڈمیں ماؤں پر شیلنگ ، ویڈیو

امریکا میں سیاہ فام جارج فلائیڈ کی ہلاکت کے خلاف مظاہروں میں پھر شدت آگئی، پورٹ لینڈ میں وفاقی اہلکاروں اور مظاہرین میں جھڑپیں ہوئی ہیں اور میئر نے ایک بار پھر کہا ہے کہ وفاقی سیکیورٹی اہلکار شہر چھوڑ دیں۔

وفاقی اہلکاروں کی جانب سے پورٹ لینڈ میں طاقت استعمال کرنے کے بعد صورتحال مزید خراب ہوگئی ہے۔

اہلکاروں نے ان ماؤں پر بھی آنسو گیس کی شیلنگ کی جو مظاہرین کو بچانے کیلئے سڑکوں پر آئی تھیں اور انھوں نے انسانی ڈھال بنائی تھی۔

احتجاج کے دوران کئی افراد کو حراست میں لیا گیا اور مقامی افراد کے مطابق ایسی گاڑیاں استعمال کی گئیں جن پر کوئی نشان نہیں تھا۔

مئی میں جارج فلائیڈ کی پولیس اہلکار کے ہاتھوں ہلاکت کے بعد سے علاقے میں مسلسل احتجاج کیا جا رہا ہے، بلیک لائیوز میٹر تحریک کے کارکنوں نے کورٹ ہاوس اور پولیس ایسوسی ایشن کی عمارت پر بھی دھاوا بولا۔

احتجاج کے دوران اہلکاروں اور مظاہرین میں جھڑپیں ہوئیں، فورسز نے آنسو گیس کی شیلنگ کی اور کئی افراد کو گرفتار کرلیا۔

شہر کے ڈیموکریٹ میئر ٹیڈوہیلر کا کہنا ہے کہ وفاقی اہلکاروں کی موجودگی مزید فسادات کا سبب بن رہی ہے۔ انھیں فوری طور پر واپس چلے جانا چاہئے۔ اسپیکر نینسی پلوسمی نے بھی مظاہرین کی پکڑ دھکڑ اور شیلنگ کی مذمت کی ہے۔

ڈیموکریٹ رہنماؤں کا دباو بڑھنے کے باوجود امریکی ہوم لینڈ سیکیورٹی حکام نے کریک ڈاؤن کا دفاع کرتے ہوئے معافی مانگنے اور وفاقی اہلکاروں کو واپس بلانے سے انکار کردیا ہے۔

ٹرینڈنگ

مینو