ویکسین کے نام پر ٹریکنگ چپ نامنظور، ویڈیو

برطانیہ میں لاک ڈاؤن اور کورونا ویکسین کے نام پر ٹریکنگ چپ نامنظور کے نعرے بلند ہوگئے ، پولیس نے جریمی کوربن کے ماہر فلیات بھائی سمیت کئی افراد کو حراست میں لے لیا ہے۔

برطانوی شہری پابندیوں کے خلاف پھٹ پڑے، سیکڑوں افراد لندن کے ہائیڈ پارک میں جمع ہوئے اور حکومت کے خلاف نعرے لگائے۔ مظاہرین کا کہنا تھا کہ وائرس جعلی ہے، لوگوں کو زبردستی ویکسین دیئے جانے کا خطرہ ہے ، اس بہانے شہریوں میں چپ ڈال کر انھیں ٹریک کیا جاسکے گا۔

شہریوں نے ماسک نہ پہننے کا اعلان کرتے ہوئے مطالبہ کیا کہ لاک ڈاون فوری ختم کیا جائے اور نیشنل ہیلتھ سروس ان مریضوں کو دیکھے جو دیگر بیماریوں میں  مبتلا ہیں مگر ان پر اسپتالوں کے دروازے بند کردیئے گئے ہیں۔ سابق لیبر رہنما جریمی کوربن کے 73 سالہ بھائی پیرز کوربن نے مظاہرین کی قیادت کرتے ہوئے خطاب کیا۔

پولیس نے پہلے پیرز کوربن کے گرد حصار بنایا اور کچھ دیر بعد انھیں حراست میں لے لیا گیا۔

لوگ شرم کرو ، شرم کرو کے نعرے لگاتے رہے اور پولیس اہلکاروں نے پکڑ دھکڑ جاری رکھی۔

عوام کا کہنا تھا کہ جعلی وائرس کا دھوکا دے کر شہری آزادی صلب کرلی گئی ہے۔

مظاہرین نے لوگوں کو حراست میں لینے کا اقدام قابل مذمت قرار دیا اور کہا کہ لاک ڈاؤن مخالف احتجاج جاری رہے گا۔

برطانوی شہریوں کا دعویٰ تھا کہ 5 جی ٹاورز کا کوویڈ 19 بیماری میں مبتلا افراد پر برا اثر پڑتا ہے اور خدشہ ہے کہ یہ ٹاور ہر جگہ لگا دیئے جائیں گے۔

لوگوں کا کہنا تھا کہ پابندیاں لگا کر برطانیہ کو شمالی کوریا بنایا جا رہا ہے۔

ایسے ہی مظاہرے برطانیہ کے علاقے ساوتھ ایمپٹن ، کارڈف ، گلاس گو اور ناٹنگھم میں بھی کئے گئے۔

ٹرینڈنگ

مینو