موت کا وقت مقرر، کراچی میں لوڈشیڈنگ کا نہیں

لوڈشیڈنگ سے کراچی والوں کے صبر کا پیمانہ لبریز ہونے لگا، مختلف علاقوں میں بجلی کی فراہمی معطل رہنے کا دورانیہ 12 گھنٹے تک پہنچ گیا۔

گرمی عروج پر پہنچی تو بجلی کا بحران بھی عروج پر پہنچ گیا، کے الیکٹرک کو ایندھن کی فراہمی بہتر ہونے کے باوجود بھی کراچی والوں کو سکون میسر نہ آسکا۔

دن ہو یا رات کئی کئی گھنٹے لوڈشیڈنگ کا عذاب جاری ہے ، شہری کہتے ہیں کے الیکٹرک مختلف بہانوں سے فراہمی معطل کردیتی ہے، مریضوں اور ضعیف افراد کیلئے گھروں میں رہنا مشکل ہوگیا ہے، موت کا وقت مقرر ہے لیکن لوڈشیڈنگ کا تو کوئی وقت ہی نہیں۔

لانڈھی ، کورنگی ، ملیر ، شاہ فیصل کالونی ، پی ای سی ایچ ایس، گلستان جوہر ، نیو کراچی، ایف بی ایریا، ناظم آباد اور لیاری میں صورتحال زیادہ خراب ہے جہاں لوڈمنیجمنٹ کے نام پر کئی  کئی کئی گھنٹے بجلی کی فراہمی معطل رہتی ہے۔

کے الیکٹرک نے رات 12 بجے سے صبح 7 بجے تک بجلی کی بلاتعطل فراہمی کا وعدہ کیا تھا لیکن انتظامیہ وعدہ کرکے سو گئی اور رات کو بھی مختلف علاقوں میں بجلی کی فراہمی معطل رہنا معمول ہے۔

ٹرینڈنگ

مینو