عدالت نے حکومتی وبا سے بچالیا، مالز مالکان

طاہر عباس

آل پاکستان شاپنگ مالز ایسوسی ایشن نے ملازمین اور صارفین کیلئے ایس او پیز پر عمل شروع کردیاہے۔ ایسوسی ایشن کے چیئرمین  اور سینٹورس مال کے سی ای او سردار یاسر نے کہا ہے کہ صارفین کو تمام شاپنگ مالز میں محفوظ ماحول فراہم کیا جائے گا۔ 

سینٹورس مال کے مالک سردار یاسر نے کہا کہ تمام مالز مالکان کو کورونا وبا کی شدت کا احساس ہے اور انھوں نے بہترین حفاظتی اقدامات کئے ہیں۔

زبرنیوز کے نمائندے طاہر عباس کے ساتھ ہیوسٹن سے گفتگو کرتے ہوئے سردار یاسر نے سپریم کورٹ کے فیصلے کو بروقت قرار دیا۔

انھوں نے کہا کہ عام دکانوں کے مقابلے میں بڑے مالز میں لوگوں کیلئے گنجائش زیادہ ہوتی ہے ، دکانیں بڑی اور ان کے باہر کھلی جگہ ہونے کے سبب صارفین کو خریداری میں نسبتا آسانی ہوجاتی ہے۔ یہی وجہ ہے کہ وہاں سماجی فاصلہ قائم رکھنا ممکن ہے۔

انہوں نے بتایا کہ بڑے مالز میں شاپنگ کا سب سے بڑا فائدہ یہ ہے کہ لوگ کرنسی کے بجائے پلاسٹک منی استعمال کرتے ہیں ، اس طرح نوٹوں کے زریعے  کورونا وبا پھیلنے کا خدشہ نسبتا کم ہوجاتا ہے۔

آل پاکستان مالز ایسوسی ایشن کے چیئرمین نے کہا کہ ہر مال میں وقفے وقفے سے اسپرے کیا جارہا ہے ، درجنوں گارڈز پہلے ہی موجود ہیں تاکہ ایس او پیز پر عمل ممکن بنائیں۔

سردار یاسر نے بتایا کہ انہوں نے اپنے تمام مالز میں حفاظتی تدابیر پر عمل شروع کرادیا ہے کیونکہ ان کے مالز بین الاقوامی معیار کے مطابق بنائے گئے ہیں۔

انھوں نے کہا کہ شاپنگ مالز سے لاکھوں افراد کا روزگار وابستہ ہے ، عید کے موقع پر اربوں روپے کی خریداری سے حکومت کو ٹیکس کی مد میں بھی خاطر خواہ آمدنی ہوگی جس کی ملک کو اس وقت سب سے زیادہ ضرورت ہے۔

سینٹورس مال کے سی ای او کا کہنا ہے کہ کووڈ 19 کے بعد دنیا بدل گئی ہے، لوگوں کو نیو نارمل کے ساتھ جینا ہوگا اور انہوں نے اپنے تمام مالز کو اس نئے ماحول میں ڈھال لیا ہے۔

مالز انتظامیہ کے ایس او پیز میں طے کیاگیا ہے کہ کسٹمر اور ملازمین سمیت تمام افراد کا درجہ حرارت چیک کیا جائے گا۔ عملے کی صحت کو مسلسل مانیٹر کیا جائے گا۔

ملازمین اور صارفین کو مالز میں ماسک پہننے کا پابند بنایا گیا ہے، ہینڈ سینی ٹائزر نہ صرف داخلے کے مقامات بلکہ ریسپشن ایریا اور کیشن کاونٹرز پر بھی رکھے گئے ہیں۔

سینٹورس مال میں کورونا سے بچاؤ کے اقدامات

Posted by Zabar News on Monday, May 18, 2020

سردار یاسر نے بتایا کہ صحت کو مدنظر رکھتے ہوئے 70 برس سے زائد عمر کے افراد کو مالز میں داخلے کی اجازت نہیں۔ بیمار افراد کا داخلہ بھی ممنوع ہے جبکہ سماجی فاصلے کے اصول پر عمل نہ کرنے والوں کو باہر نکالا جاسکے گا۔

سینٹورس مال میں ایک ساتھ صرف 5 افراد کو لفٹ استعمال کرنے کی اجازت ہوگی ، واش رومز میں بیسن اور یورینیٹرز استعمال کرنے والوں کے درمیان بھی فاصلہ قائم کردیا گیا ہے۔

آل پاکستان شاپنگ مالز ایسوسی ایشن کے چیرمین نے کہا کہ صارفین کے درمیان 6 فٹ کا فاصلہ یقینی بنایا جارہا ہے، دکانیں بند کئے جانے کے بعد ہر روز فیومیگیشن کی جائے گی تاکہ جراثیم سے محفوظ رہا جاسکے۔

شاپنگ مالز کے دیگر مالکان نے بھی سپریم کورٹ کا شکریہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ عدالت نے کاروبار کو حکومتی وبا سے بچالیا ہے۔

ٹرینڈنگ

مینو