جب یہ ہوگا تو کورونا کیسے ختم ہوگا؟

ویب ڈیسک

قوم کو نصیحتیں کرنے والے کئی رہنما اس عید الاضحیٰ پر خود کورونا ایس او پیز پر عمل کرتے نظر نہ آئے، ان میں ایک تو ایسے تھے جو خود وبا کا شکار ہوکر اللہ اللہ کرکے صحت یاب ہوئے ہیں۔

گورنر پنجاب چوہدری سرور اور وزیراعلی عثمان بزدار نے فیس ماسک لگا کر لاہور میں ایک ساتھ  نماز عید ادا کی۔

نماز ختم ہوتے ہی چوہدری سرور وزیراعلی کی طرف لپکے اور ہاتھ آگے بڑھادیا، وزیراعلی جہاں تھے وہیں کھڑے رہے اور سینے پر ہاتھ رکھ کر پیغام دیا کہ اس عید پر زرا دور ہی رہنا بہتر ہے۔

وزیراعلی نے ہاتھ نہیں ملایا تو گورنر صاحب نے باقی نمازیوں کو دیکھ کر اپنا ہاتھ فضا میں بلند کرکے ہیلو ہائے پر اکتفا کرلیا۔

وائرس کو شکست دینے والے گورنر سندھ عمران اسماعیل کو نمازعید کی ادائیگی کے دوران فیس ماسک لگانا یاد نہیں رہا ، یہی نہیں ان کے آس پاس بیٹھے افراد بھی فیس ماسک کو غیر ضروری سمجھ کر خطبہ سنتے رہے۔

وزیراعلی خیبرپختونخوا محمود خان نے تو فیس ماسک لگایا لیکن شاید صوبائی وزیر شوکت یوسف زئی سمجھتے ہیں کہ کورونا دم توڑ چکا ہے، یہی وجہ ہے کہ انہوں نے وائرس کو گھاس نہیں ڈالی۔

چیئرمین کمشیر کمیٹی شہریار خان دبنگ شخصیت کے مالک ہیں ، وہ کسی کسی کو ہی خاطر میں لاتے ہیں لیکن اس کسی میں کورونا وائرس شامل نہیں۔

جناب نے مظفر آباد کی مرکزی عید گاہ میں نماز ادا کرنے کے بعد عوام سے خطاب کیا لیکن فیس ماسک نہیں لگایا۔

دوسروں کی تو بات ہی کیا خود صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے ماسک پہنے بغیر قوم کو ماسک لازمی پہننے کا پیغام دیا۔

ٹرینڈنگ

مینو