بختاور کی منگنی، والدہ جیسا لباس کیوں نہیں پہننا؟

پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین اور سابق صدر آصف علی زرداری کی صاحبزادی بختاور بھٹو کی منگنی کی تقریب بلاول ہاؤس کراچی میں ہوئی، بختاور بھٹو اور محمود چودھری نے روایتی مشرقی لباس زیب تن کیا۔

تقریب میں صنم بھٹو، فریال تالپور، ڈاکٹر عذرا پیچوہو ، ڈاکٹر عاصم حسین، انور مجید، اے جی مجید ، ریاض لال جی اور ملک ریاض بھی شریک ہوئے۔

بختاور بھٹو کے منگیتر محمود چوہدری اہلخانہ اور قریبی دوستوں کے ساتھ گاڑیوں کے قافلے میں بلاول ہاؤس پہنچے، مہمانوں کی تواضع کوفتے ، بریانی ، چکن بروسٹ ، مچھلی اور انگریزی کھانوں سے کی گئی۔

سابق صدر آصف زرداری مہمانوں سے ملتے اور مبارکباد وصول کرتے رہے جبکہ پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کورونا سے متاثر ہونے کے باعث بہن کی منگنی میں ورچوئل طریقے سے شریک ہوئے۔

بختاور بھٹو اور ان کے منگیتر محمود چوہدری نے روایتی مشرقی لباس زیب تن کیا۔ منگنی کی رسم میں دونوں نے ایک دوسرے کو انگوٹھی پہنائی۔

منگنی سے پہلے کہا جارہا تھا کہ بختاور بھٹو زرداری تقریب میں والدہ کے نکاح جیسا لباس پہننا چاہتی ہیں، بینظیر بھٹو کے نکاح کیلئے لباس تیار کرنے والے فیشن ہاؤس ‘ریشم رواج’ کی جانب سے سوشل میڈیا پر شیئر کی گئی پوسٹ کے مطابق بختاور بھٹو زرداری نے والدہ کے لباس جیسا لباس پہننے کی خواہش ظاہر کی تھی۔

منگنی کی تصاویر میں دیکھا جاسکتا ہے کہ بختاور بھٹو کا لباس والدہ کے لباس سے مختلف ہے۔ ذرائع کے مطابق بختاور بھٹو نے رشتے داروں اور دوستوں کے مشورے پر والدہ کے نکاح جیسا لباس پہننے کا ارادہ ترک کردیا تھا۔

ٹرینڈنگ

مینو