گلگت بلتستان صوبے کیلئے کمیٹی بنے گی، وزیراعظم

وزیراعظم عمران خان نے سب سے پہلے گلگت بلتستان کی صوبائی حیثیت پر کام کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ نوازشریف اور آصف زرداری کو 30 سال سے جانتے ہیں، ان پر عذاب آتا دیکھا ہے اور یہ عبرتناک ہے۔

عمران خان نے گلگت بلتستان میں نومنتخب کابینہ کی تقریب حلف برداری میں شرکت کی، اس موقع پر گورنر گلگت بلتستان نے کابینہ ارکان سے حلف لیا۔

وزیراعظم نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ گلگت بلتستان کو صوبہ بنانے کیلئے فوری طور پر کمیٹی بنائی جائے گی جو ٹائم لائن پر کام کرے گی، جس رخ پر گلگت بلتستان کو ڈالیں گے عوام کی زندگی بدل جائے گی۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ گلگت بلتستان کے پراجیکٹس کا فیصلہ مقامی افراد خود کریں گے، گلگت بلتستان میں احساس پروگرام لے کر آ رہے ہیں اور فی خاندان 10 لاکھ روپے تک علاج کرایا جا سکے گا جبکہ سیاحت کو فروغ دینے کیلئے سستے قرضے دیئے جائیں گے۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ کسی کو کیا علم تھا کہ پانامہ سے ان کے محلات سامنے آ جائیں گے، چوری چھپتی نہیں ، ایک جھوٹ چھپانے کیلئے 100 جھوٹ بولنے پڑتے ہیں، ایسے پیسے کا کیا فائدہ جو آپ اور آپ کی اولاد کو تباہ کردے ، نوازشریف اور آصف زرداری پر عذاب آتا دیکھا ہے۔ اب ان کے بچوں کو بھی جھوٹ بولنا پڑ رہا ہے۔

انھوں نے اسحاق ڈار پر تنقید کی اور ان کے انٹرویو کو جھوٹ کا پلندہ قرار دیا، عمران خان نے کہا کہ انٹرویو کے دوران اسحاق ڈار کی شکل دیکھنے والی تھی، ایسا لگ رہا تھا دل کا مسئلہ نہیں بھی تو اب ہارٹ اٹیک آ جانا ہے۔

عمران خان نے تنقید کرتے ہوئے کہا کہ کورونا میں لوگ مر رہے ہیں لیکن پی ڈی ایم کمپین کر رہی ہے ، یہ چوری بچانے کیلئے جلسے کر رہے ہیں۔

ٹرینڈنگ

مینو